اہم ترین خبریںسعودی عرب

سعودی عرب میں بغاوت کا خدشہ بڑھنے لگا، بن سلمان کی قید سے اہم شہزادہ فرار

شیعیت نیوز : سعودی عرب میں بغات کا خدشہ بڑھنے لگا ہے جس کے سبب سعودی ولیعہد محمد بن سلمان کی پریشانی میں شدید حد تک اضافہ ہوگیا ہے اور وہ اب سکون کیلیے ادویات کا استعمال کرنے لگے ہیں۔

سعودی عرب کے مشہور سوشل میڈیا صارف نے سعودی عرب کے سابق ولیعہد محمد بن نائف کے ملک سے فرار ہوکر ترکی جانے کی اطلاع دی ہے۔

آل سعود خاندان کے رازوں کا انکشاف کرنے والے مشہور ٹوئیٹر اکاونٹ مجتہد نے ٹوئٹ کیاہے کہ کچھ رپورٹوں میں بتایا گیا ہے کہ سابق ولیعہد محمد بن نائف بندر بن سلطان چھاونی سے ترکی فرار کر گئے۔

یہ خبر بھی پڑھیں سعودی عرب اور اسرائیل میں قربتیں بڑھنے لگیں، سعودی فضاؤں میں اسرائیلی طیارےکی پرواز

ان کا کہنا ہے کہ کچھ افراد نے اس خبر کی تائید کی ہے جبکہ کچھ نے اس کی تردید کی ہے۔

اس سے پہلے ذرائع نے خبر دی تھی کہ شاہ سلمان کی صحت کی خرابی کی وجہ سے ولیعہد محمد بن سلمان کو اپنے خلاف تختہ پلٹنےیا بغاوت کا خوف ہے جسے دیکھتے ہوئے ان کے حکم پر اب تک 20 سے زائد شہزادوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔

گرفتار ہونے والے شہزادوں میں سب سے اہم نام شہزادہ احمد، ان کے بیٹے شہزادہ نائف بن احمد بن عبد العزیز، سابق ولیعہد محمد بن نائف اور ان کے سوتیلے بھائی نواف کے ہیں۔

پرنس نائف سعودی فوج کے خفیہ اور سیکورٹی شعبے کے سربراہ ہیں اور گرفتار ہونے والے سعودی عرب کے اب تک کے سب سے اعلی فوجی افسر ہيں۔

اس سے پہلے سعودی ولیعہد محمد بن سلمان نے نومبر 2017 میں 500 شہزادوں اور اہم تاجروں کو ریٹز کارلٹن ہوٹل میں نظر بند کر دیا تھا جنہیں اربوں ڈالر اور حکومت سے وفاداری کے وعدے پر آزاد کر دیا گیا تھا۔

 

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close