دنیا

روس اور چین کا ایران کے خلاف امریکہ کی ظالمانہ پابندیوں کے خاتمے کا مطالبہ

شیعت نیوز: روس کی وزارت خارجہ کی ترجمان نے ایران میں کورونا کی جاری صورتحال کو امریکی پابندی کی وجہ بتاتے ہوئے ایران پر امریکہ کی ظالمانہ پابندیوں کے خاتمے کا مطالبہ کیا۔

روس کی وزارت خارجہ کی ترجمان ماریا زاخارووا نے ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران جو ویڈیو کانفرنس کی صورت میں ہوئی کہا کہ ماسکو، واشنگٹن سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ ایران کے خلاف غیر انسانی پابندیوں کو جو کورونا سے مقابلہ کرنے کی راہ میں رکاوٹ ہے ختم کرے۔

اس سے قبل روس کے دیگر حکام نے بھی حالیہ ہفتوں کے دوران ایران مخالف امریکہ کی ظالمانہ پابندیوں کے خاتمے کا مطالبہ کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : برطانیہ کے وزیراعظم بورس جانسن بھی کورونا وائرس کا شکار

عالمی سطح پر ایران کے خلاف جاری امریکی پابندیوں کے خاتمے کے مطالبوں اور دباو کے باوجود امریکی حکام ایران کے خلاف یکطرفہ پابندیوں کو اٹھانے سے انکار کر رہا ہے۔

دوسری جانب چین کی کمیونسٹ پارٹی کے عالمی امور کے نائب وزیر نے کورونا وائرس سے متعلق واشنگٹن کے پروپگنڈوں پر کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا کہ امریکی پابندیاں، کورونا وائرس کا مقابلہ کرنے کی راہ میں ایران کے اقدامات پر منفی اثرات مرتب کر رہی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : ایران نے فرانس سے بغیر بارڈرز کے ڈاکٹروں کی ٹیم 48بستروں کے اسپتال سمیت کیوں واپس کی؟

ارنا کی رپورٹ کے مطابق چین کی کمیونسٹ پارٹی کے عالمی امور کے نائب وزیر جو ری نے کل بیجنگ میں ایران کے سفارتخانے میں ایران کے سفیر محمد کشاورز زادہ سے ہونے والی ملاقات میں طبی ساز وسامان کی امداد دینے کے موقع پر کہا کہ چین نے کورونا پر قابو پانے میں کامیابی حاصل کی لیکن امریکی حکام کورونا وائرس کو چین سے منصوب کر کے چین کے حکام اور عوام کو بدنام کرنے کی کوشش میں ہیں۔

چین کی کمیونسٹ پارٹی کے اس اعلی عہدیدار نے چین میں کورونا وائرس شروع ہونے پر ایرانی عوام کی مدد و حمایت کی قدردانی کرتے ہوئے کہا کہ ایران وہ پہلا ملک تھا جس نے کورونا کا مقابلہ کرنے کے لئے چین کی مدد اور حمایت کی۔

واضح رہے کہ چین کی حکومت اور عوام نے اب تک کورونا وائرس کی تشخیص کے کٹ، ماسک، مخصوص لباس اور دیگر طبی وسائل کی 19 کھیپ ایران بھیجی ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close