اہم ترین خبریںپاکستان

کراچی سے مزید4بے گناہ جوانوں کی جبری گمشدگی انتہائی قابل مذمت اقدام ہے ،علامہ صادق جعفری

رات کی تاریکی میں دروازے توڑ کر گھروں میں داخل ہونے سے ملت جعفریہ میں احساس عدم تحفظ پروان چڑھ رہاہے

شیعت نیوز: کراچی میں چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے4نوجوانوں کی جبری گمشدگی قابل مذمت اقدام ہے ۔ بے گناہ جوانوں کا یوں لاپتہ کردینا بنیادی شہری حقوق کی خلاف ورزی ہے ۔قانون نافذ کرنے والے ادارے ماورائے آئین چھاپوں اور گرفتاریوں سے خوف وہراس پیدا کررہے ہیں ۔ رات کی تاریکی میں دروازے توڑ کر گھروں میں داخل ہونے سے ملت جعفریہ میں احساس عدم تحفظ پروان چڑھ رہاہے ۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین کراچی ڈویژن کے سیکریٹری جنرل علامہ محمد صادق جعفری نے ایم ڈبلیوایم کراچی ڈویژن کی شوریٰ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہاکہ پاکستان کو آئین تمام شہریوں کو تحفظ فراہم کرتا ہے ، کسی بھی جرم میں ملوث شہری کو حوالات میں بند کیا جاتا ہے ،اسے عدالت میں پیش کرکے اس پر الزام ثابت کیا جاتا اور اسے اپنی صفائی پیش کرنے کا موقع فراہم کیا جاتاہے ۔ ہمارے قانون نافذ کرنے والے ادارے جمہوری دور حکومت میں آمریت کا مظاہرہ کررہے ہیں ۔ گذشتہ رات مختلف علاقوں سے جبری گمشدہ کیئے جانے والے چاروں نوجوان بے گناہ ہیں ۔ ملت جعفریہ پہلے ہی درجنوں جوانوں کی جبری گمشدگیوں پر طویل عرصہ سے سراپا احتجاج ہے اس پر ستم یہ کہ مزید چار جوانوں کو لاپتہ کردیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں: کراچی،ریاستی دہشت گردی تاحال جاری، مزید 4شیعہ جوان جبری طور پر گمشدہ کردیئے گئے

علامہ صادق جعفری نے گورنر سندھ، وزیر اعلیٰ سندھ، کورکمانڈرکراچی، ڈی جی رینجرز سندھ، آئی جی سندھ سے مطالبہ کیا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کے غیر آئینی اور غیر قانونی اقدامات کا فوری نوٹس لیں ۔ چادر اور چار دیواری کی پامالی اور خواتین کی توہین قابل مذمت اقدام ہے ۔ تمام جبری گمشدہ جوانوں کو عدالت میں پیش کیا جائےاور بے گناہوں کو را کیا جائے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close