دنیا

شہید جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا ذمہ دار امریکہ ہے۔ اقوام متحدہ

شیعت نیوز : اقوام متحدہ نے ایک بار پھر ایران کی قدس فورس کے کمانڈر شہید جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کو عالمی ضابطوں کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

آئی آر آئی بی نیوز کے مطابق اقوام متحدہ کی خصوصی رپورٹر ایگنس کیلا مارڈ نے اپنی ایک تفصیلی رپورٹ میں کہا کہ جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا ذمہ دار امریکہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں : شہیدعارف حسینی ؒنے پاکستان میں فرقہ واریت کے خلاف کامیاب جہاد کیا، سید ہاشم الحیدری

انہوں نے کہا کہ اگر یہ واقعہ کسی مغربی ملک میں پیش آتا تو اسے ایک جنگی اقدام قرار دے کر سخت نوٹس لیا جاتا۔

اقوام متحدہ کی رپورٹر نے ایک بار پھر اس بات پر زور دیا کہ ایسا کوئی ثبوت موجود نہیں کہ جس یہ ثابت ہو سکے کہ جنرل قاسم سلیمانی امریکی فوجی مراکز پر حملے کا منصوبہ بنا رہے تھے۔

یہ بھی پڑھیں : امریکی فوجی اتحاد کے زیرکنٹرول علاقوں میں داعش کے جرائم بڑھ گئے

اس سے قبل 9 جون کو بھی ایگنس کیلامارڈ نے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن کے نام اپنی رپورٹ میں یہ اعلان کیا تھا کہ امریکہ جنرل قاسم سلیمانی کو اپنے فوجیوں کے لئے فوری اور یقینی خطرہ ثابت کرنے میں ناکام رہا ہے اور ایک تیسرے ملک میں ایران کے ایک اعلیٰ فوجی افسر کو قتل کر کے اُس نے عالمی ضابطوں اور اقوام متحدہ کے منشور کو پاؤں تلے روندا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : شہید عارف حسینی ؒ کو اسلام کی راہ پر چلنے کی پاداش میں شہید کیا گیا، شیخ نعیم قاسم

یاد رہے کہ ایران کی قدس فورس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی عراقی حکومت کی دعوت پر 3 جنوری کو عراق پہنچے تھے اور ایئر پورٹ کے باہر امریکی دہشت گردوں نے میزائل حملہ کر کے انہیں شہید کر دیا تھا۔ امریکی وزارت جنگ پینٹاگون نے یہ اعتراف کیا تھا کہ اس قتل کا حکم صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دیا تھا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close