مقبوضہ فلسطین

صیہونی پولیس نے فلسطینی مسلمانوں کو باب الرحمہ سے بےدخل کردیا

شیعت نیوز: مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی پولیس چیف نے مسجد اقصیٰ کے عبادت کے علاقے باب الرحمہ کو خالی کرنے کا حکم جاری کے دیا۔

مقامی ذرائع کے مطابق اسرائیلی پولیس نے اپنے کمانڈر کے جاری کردہ حکم نامہ کے بعد مسلمان عبادت گزاروں کو زبردستی عمارت سے باہر نکال دیا۔

حالیہ ہفتوں میں پولیس فورس باب الرحمہ کے علاقے پر متعدد بار ہلہ بولا اور عمارت سے فرنیچر کو ضبط کر لیا۔

یہ بھی پڑھیں : تمام وسائل سے مسجدالاقصی کے دفاع اور صیہونیوں کا مقابلہ کرنے پر تاکید

گذشتہ فروری میں بیت المقدس سے تعلق رکھنے الے شہریوں نے مسجد اقصیٰ کے عبادت کے علاقے الرحمہ کو دوبارہ کھولا جسے اسرائیلی پولیس نے 16 سال پہلے بند کر دیا تھا۔

مقبوضہ بیت المقدس کے رہنما باب الرحمہ پر اسرائیلی قبضے اور اسے یہودی مندر بنانے کا اسرائیلی ارادہ پہلے ہی بیان کر چکے ہیں جو مکمل اسلامی جگہ پر قبضے کا حصہ ہے جسے صیہونی ٹیمپل ماونٹ کا دعویٰ کرتے ہیں۔

یاد رہے کہ اسرائیلی پولیس افسروں نے اتوار کی صبح مسجد اقصیٰ کے باب الرحمہ عبادت کے علاقے پر اپنے جوتے اتارے بغیر ہلہ بول دیا۔

سوشل میڈیا پر گردش کرت ایک ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہر کہ اسرائیلی پولیس آفیسرز بغیر جوتے اتارے عبادت کے علاقے اور اسکے قالینوں کی بے حرمتی کی ۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close