اہم ترین خبریںیمن

سعودی عرب اور عرب امارات، یمن میں منشیات اسمگلنگ کرنے میں ملوث ہے۔ یمنی وزارت داخلہ

شیعت نیوز: یمنی وزارت داخلہ کے ترجمان عبدالخالق العجری نے اعلان کیا ہے کہ ایک عرصے سے جارح سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات یمن کے اندر منشیات اسمگلنگ کرنے میں مشغول ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے ہونے والی تحقیقات سے یہ ثابت ہو چکا ہے کہ جارح سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات اپنے جنگی اخراجات کو پورا کرنے کے لئے ایک عرصے سے یمن سمیت دنیا کے مختلف ممالک کے اندر بڑی مقدار میں منشیات اسمگلنگ کرنے میں براہ راست ملوث ہے۔

عرب نیوز چینل المسیرہ کے مطابق یمنی وزارت داخلہ کے ترجمان نے کہا کہ یمن کے اندر منشیات اسمگلنگ کرنے کے لئے جارح سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات نے ملک کے اندر موجود منشیات کے بڑے تاجروں کے ساتھ براہ راست رابطہ استوار کر رکھا ہے جبکہ یمن کے اندر اسمگل ہونے والی منشیات کی ایک بڑی مقدار سعودی عرب کی بکتر بند گاڑیوں کے ذریعے لائی جاتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : امریکہ استقامتی محاذ کا مقابلہ کرنے کیلئے دہشتگردوں کو استعمال کر رہا ہے۔ رکن محمد البخیتی

عبدالخالق العجری نے اپنی گفتگو میں قوم کے خلاف جرائم انجام دینے والے عناصر اور منشیات کے سعودی اسمگلرز کے خلاف ہونے والے کامیاب آپریشنز میں یمنی عوام کے وسیع تعاون پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

واضح رہے کہ یمنی وزارت داخلہ کے ترجمان عبدالخالق العجری نے گذشتہ روز بھی یہ اعلان کیا تھا کہ یمن کی انسداد منشیات فورس نے گذشتہ 6 ماہ کے دوران یمن میں منشیات اسمگلنگ کرنے والے سعودی ایجنٹس کے خلاف 235 کامیاب آپریشنز انجام دیئے ہیں جن کے دوران سعودی عرب کے ساتھ براہ راست تعلق رکھنے والے القاعدہ کے 52 دہشت گرد بھی گرفتار ہوئے ہیں۔

گذشتہ روز عبدالخالق العجری نے میڈیا کو بتایا تھا کہ ان کامیاب آپریشنز کے دوران یمن کے اندر منشیات اسمگلنگ کرنے والے سعودی ایجنٹس کے قبضے سے 29 ٹن 500 کلوگرام منشیات بھی برآمد کی گئی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close