کاپی رائٹ کی وجہ سے آپ یہ مواد کاپی نہیں کر سکتے۔
سعودی عرب

 آل سعود نے عالم دین سمیت 37 شیعہ مسلمانوں کے سر قلم کردیئے

سعودی حکومت نے آج 37 افراد کو موت کی سزا دیدی جن میں ایک 15 سالہ بچہ عبداللہ الزہر بھی شامل تھا۔
سعودی حکومت نے آج 37 افراد کو موت کی سزا دیدی جن میں ایک 15 سالہ بچہ عبداللہ الزہر بھی شامل تھا۔

شیعیت نیوز: آیت اللہ باقر النمر کو شہید کرنے کے بعد آل سعود مثل یہود نے ایک اور ممتاز شیعہ عالم دین شیخ محمد عبدالغنی کو بھی شہید کر دیا ہے-

اطلاعات کے مطابق سعودیہ عرب میں گذشتہ روز شیعہ اسکالر سمیت 37 مومنین کا سر قلم کر دیا، سعودی شاھی خاندان نے الشیخ باقر النمر کی تحریک اصلاح کے مزید 37 افراد کو سزائے موت کا حکم صادر کیا، یہ تمام افراد سعودی افواج نے شیعہ نشین علاقے القطیف سے گرفتار کیے تھے۔

جن 37 بے گناہوں کو گذشتہ روز سزائے موت دی گئ ان میں سے ایک قطیف کے معروف شیعہ عالم دین شیخ محمد العطیہ عبدالغنی بھی تھے۔ کل علی الصبح ریاض میں سعودی حکومت نے ان تمام افراد کے سر قلم کر کے ظلم و بربریت کی نئی تاریخ رقم کی ہے۔

حیران کن بات یہ ہے کہ بات بات پر انسانی حقوق کا نعرہ لگانے والی انسانی حقوق کی نام نہاد تنظیموں سمیت بے حس عالم اسلام کے حکمران آل سعود کےاس ظلم پر خاموش ہیں۔

اطلاعات کے مطابق جن 37 کا قتل کیا گیا ہے ان میں ایک 15 سالہ نوجوان بھی شامل ہے جس پر آل سعود نے دہشتگردی کرنے کا الزام لگایا کر موت کے گھاٹ اتارا۔

واضح رہے کہ ا س قبل معروف شیعہ عالم دین شیخ نمر کا سر قلم کردیا تھا انکا جرم صرف یہ تھا کہ انہوں نے اپنے ملک میں جمہوریت اور اپنی قوم کے حقوق کی خاطر تحریک کا آغاز کیا ہوا تھا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close