سعودی عرب

سعودی عرب میں کورونا وائرس پر قابو پانے میں کئی ماہ درکار

شیعت نیوز : سعودی عرب کی وزارت صحت نے کہا ہے کہ سعودی عرب میں کورونا وائرس پر قابو پانے میں کئی ماہ لگ سکتے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق سعودی وزارت صحت کے ترجمان کے مطابق کورونا وائرس پر قابو پانے کے لیے کئی ماہ درکار ہیں جبکہ کورونا وائرس ایک مریض کی وجہ سے 70 افراد میں وائرس منتقل ہوتا ہے۔

سعودی حکام کے مطابق جس مریض میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوتی ہے وہ اس سے پہلے 30 سے 40 افراد سے ملاقاتیں کر چکا ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : کورونا وائرس کے پھیلاؤ میں سعودی عرب کا کردار حصہ دوم

سعودی وزرات صحت کے ترجمان کے مطابق ہدایات پر جتنا سختی سے عمل ہوگا اتنا جلدی وائرس پر قابو پایا جاسکے گا ۔

دوسری جانب کورونا وائرس کے خلاف دنیا بھر کی طرح مشرق وسطیٰ میں بھی لاک ڈاؤن سمیت دیگر حفاظتی تدابیر اختیار کی جارہی ہیں اور سعودی عرب نے جدہ کے مختلف حصوں کو لاک ڈاؤن کردیا ہے۔

عرب ذرائع کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی وزارتِ صحت کے مطابق سعودی عرب میں مزید 140 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد سعودی عرب میں کورونا وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد 2179 تک پہنچ گئی ہے۔ گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں کورونا وائرس کے باعث مزید چار افراد ہلاک ہو گئے اس طرح اس ملک میں کورونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 29 ہوگئی ہے۔

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ایک بیان میں کہا گیا کہ حکومت نے جدہ کے 7 مختلف علاقوں میں لاک ڈاؤن اور جزوی کرفیو نافذ کرنے کا اعلان کردیا ہے تاکہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکا جاسکے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ مذکورہ علاقوں میں شہریوں کے آنے جانے پر مکمل پابندی رہے گی۔

یاد رہے کہ سعودی عرب نے رواں ہفتے دنیا بھر کے مسلمانوں سے اپیل کی تھی کہ کورونا وائرس کے باعث پیدا ہونے والی غیر یقینی صورتحال کو دیکھتے ہوئے حج کی تیاریوں کو عارضی طور پر مؤخر کردیں۔

سعودی عرب نے کورونا وائرس کے باعث گزشتہ ماہ کے اوائل میں عمرے کو عارضی طور پرمعطل کردیا تھا اور خانہ کعبہ کے صحن (مطاف) کو خالی کروادیا گیا تھا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close