سعودی عرب

سعودی عرب میں عید الفطر پر مکمل کرفیو لگانے کا اعلان

شیعت نیوز: سعودی حکام نے 30 رمضان سے 4 شوال تک ملک کے تمام علاقوں اور صوبوں میں مکمل کرفیو کا اعلان کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق سعودی وزارت داخلہ نے ملک بھر میں کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے اور اس سے بچنے کے لیے مقرر تمام حفاظتی اقدامات میں رمضان کے آخر تک لاک ڈاؤن میں توسیع کردی ہے۔

سعودی ذرائع کا کہنا ہے کہ کرفیو میں جاری نرمی 29 رمضان 22 مئی تک برقرار رہے گی جبکہ 30 رمضان سے 4 شوال تک سعودی عرب کے تمام علاقوں اور صوبوں میں مکمل کرفیو کا اعلان کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : ورلڈ ٹریڈ سینٹر ( نائن الیون ) کے حملوں میں سعودی کردار سے پردہ اٹھ گیا

وزارت داخلہ کے عہدیدار نے منگل کو جاری بیان میں بتایا کہ شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی ہدایت پر وزارت داخلہ نے تمام متعلقہ اداروں کے ساتھ یکجہتی پیدا کرکے کرفیو کے حوالے سے نئے اقدامات کیے ہیں، صحت حکام کی سفارش پر نئے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے مندرجہ ذیل فیصلے کیے گئے ہیں۔

اول 21 رمضان 1441 ہجری بمطابق 14 مئی 2020 جمعرات سے 29 رمضان 1441 ہجری بمطابق 22 مئی 2020 جمعہ کے آخر تک 4 اقدامات طے کیے گئے ہیں. (1) مستثنیٰ اقتصادی و تجارتی سرگرمیاں جوں کی توں برقرار رہیں گیں۔

25 اپریل کو جاری کردہ فیصلے میں جن اقتصادی اور تجارتی سرگرمیوں کی اجازت دی گئی تھی وہ اسی طرح جاری رکھی جاسکیں گیں، البتہ مقررہ حفاظتی تدابیر کی پابندی ضروری ہوگی( 2)دن کے وقت 8 گھنٹے ضروری کاموں سے گھروں سے نکلنے کی اجازرت ہوگی۔

روزانہ صبح 9 بجے سے لے کر شام 5 بجے تک سعودی عرب کے تمام علاقوں اور شہرو ں میں مقامی باشندے اور مقیم غیرملکی گھروں سے اپنی ضروریات پوری کرنے کے لیے نکل سکیں گے البتہ مکہ مکرمہ اس سہولت سے مستثنیٰ ہوگا۔

مقامی شہریوں اور مقیم غیرملکیوں کو تاکید کی گئی ہے کہ وہ گھروں سے نکلتے وقت مقررہ حفاظتی تدابیر کا پوری طرح سے دھیان رکھیں۔

واضح رہے کہ سعودی عرب ميں کورونا وائرس کے متاثرين کی تعداد 42 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے جب کہ 264 افراد وائرس کے باعث ہلاک ہوچکے ہیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close