سعودی عرب

سعودی عرب میں تمام شادی ہالز ، شاپنگ مالز اور ساحل سمندر بند،گرفتاریوں کا سلسلہ جاری

شیعت نیوز: سعودی عرب میں کورونا وائرس کے پھیلنے کے خطرے کے پیش نظر تمام شادی ہالز ، شاپنگ مالز، باغات اور ساحل سمندروں کو عوام الناس کےلئے بند کر دیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق حکومت نے صرف سپر مارکیٹس اور فارمیسیوں کو کھلا رکھنے کی ہدایت کی ہے۔اس سے قبل سعودی عرب نے کورونا وائرس کی وجہ سے بین الاقوامی پروازوں پر دو ہفتوں کیلئے پابندی عائد کر دی تھی۔

سعودی عرب میں شادی ہالز ، ریسٹ ہاوسز اور ہوٹلزمیں تقریبات منسوخ کردی گئی ہیں۔ سعودی عرب میں اب تک 100 سے زائد افراد کورونا وائرس میں مبتلا ہوچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی عرب سے آنے والے بھارتی شہری کورونا وائرس سے موت

دوسری طرف سعودی عرب کے ذرائع ابلاغ نے کہا ہے کہ کل رات 298 افراد کو گرفتار کیا گی کہ جن میں اہم حکومتی عہدیدار اور کئی فوجی اور اعلی پولیس حکام بھی شامل ہیں۔

ارنا نے سعودی اخبار عکاظ کے حوالے سے رپورٹ دی ہے کہ گرفتار ہونے والے افراد پر مالی بد عنوانی اور اپنے منصب سے غلط فائدہ اٹھانے کے الزامات عائد کئے گئے ہیں۔

اس سے قبل بھی سعودی حکام نے شہری اور مذہبی حقوق کے لیے آواز اٹھانے والوں اور اسی طرح مالی بد عنوانی کے الزام میں سینکڑوں افراد اور شہزادوں کو گرفتار کیا تھا۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں بڑے پیمانے پر انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہو رہی ہیں لیکن عالمی ادارے ڈرامائی خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔

شاید اس کی بڑی وجہ سعودی عرب کے لئے امریکی حمایت ہو لیکن اس کے باوجود سعودی عرب میں گرفتاریوں اور یمن میں آل سعود کے جرائم سے معلوم ہوتا ہے کہ انہیں انسانی حقوق کی ذرہ برابر بھی پرواہ نہیں ہے تاہم اگر یہی کا سلسلہ جاری رہا تو محمد بن سلمان کو یقینی طور پر مستقبل میں بڑی مشکلات کا سامنا کرنا ہوگا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close