سعودی عرب

سعودی بادشاہ اور ولی عہد بن سلمان کورونا پھیلنے کی وجہ سے قرنطینہ ميں چلے گئے

شیعت نیوز: کورونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے سعودی بادشاہ شاہ سلمان اور ولی عہد محمد بن سلمان کو محفوظ مقام پر آئسولیٹ کردیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے شاہی خاندان سے تعلق رکھنے والے کم از کم 150 افراد کورونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں۔ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے سعودی بادشاہ شاہ سلمان اور ولی عہد محمد بن سلمان کو قرنطینہ میں پہنچادیا گیا ہے۔

امریکی اخبار نیو یارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں کورونا وائرس کا نشانہ بننے والوں میں شاہی خاندان کے سینئر اور جونیئر افراد شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : فاحشہ عورت سے ناجائز تعلقات،سعودی شاہی خاندان کے 150افراد کورونا میں مبتلا

سعودی دارالحکومت ریاض کے گورنر شہزادہ فیصل بن بندر بن عبدالعزیز آل سعود بھی کورونا کا نشانہ بنے ہیں، ان کی عمر 70 سال کے قریب ہے اور وہ اس وقت آئی سی یو میں ہیں۔

سعودی عرب کےبہت سے شہزادے یورپ اور امریکہ جاتے رہتے ہیں اور امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ یہ لوگ وہاں سے کورونا وائرس اپنے ساتھ لے کر آئے ہیں۔

کسی بھی ناگہانی صورتحال سے بچنے کیلئے شاہ سلمان کو جدہ کے قریب ایک جزیرے پر آئسولیٹ کردیا گیا ہے جبکہ ولی عہد محمد بن سلمان کو بحیرہ احمر کے پاس ایک جزیرے پر قرنطینہ کیا گیا ہے۔

نیو یارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق، شاہی خاندان کے افراد کے علاج کیلئے جو الرٹ جاری کیا گیا ہے اس میں بتایا گیا ہے کہ ’’ملک بھر سے شاہی خاندان کے افراد کے علاج کیلئے تیار رہیں‘‘ یہ الرٹ کنگ فیصل اسپیشلسٹ اسپتال کی طرف سے سینئر ڈاکٹروں کو بھیجا گیا ہے۔

نیویارک ٹائمز کو اس کی نقل موصول ہوئی ہے۔ الرٹ میں لکھا ہے کہ ’’ہمیں نہیں معلوم کہ متاثرین کی کتنی تعداد کا علاج کرنا ہوگا لیکن صورتحال کیلئے ہائی الرٹ رہنا ہوگا، تمام دیگر مریضوں کو دیگر مقامات پر منتقل کر دیا جائے اور صرف انتہائی ہنگامی کیسز سے نمٹا جائے۔

اسپتال کے کسی بھی بیمار رکن کا علاج اسپتال میں نہیں کیا جائے گا، اسپتال صرف شاہی خاندان کے ارکان کے علاج کیلئے مختص رہے گا۔‘‘

واضح رہے کہ سعودی عرب میں کورونا وائرس کا پہلا کیس سامنے آنے کے 6؍ ہفتوں بعد اب یہ وبا شاہی خاندان کے افراد کو نشانہ بنا رہا ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close