سعودی عرب

سعودی جلاوطن رہنماؤں کا آل سعود کے خلاف اپوزیشن جماعت بنانے کا اعلان

سعودی عرب کے جلا وطن رہنماؤں نے اپوزیشن جماعت بنانے کا اعلان کرتے ہوئے ملک میں پر امن تبدیلی کی بات کی ہے اور سیاسی اصلاحات پر زور دینے کا مطالبہ کر دیا۔

جرمن ذرائع کے مطابق سعودی عرب سے تعلق رکھنے والے ایسے بیشتر رہنما برطانیہ، امریکا اور کینیڈا جیسے ممالک میں مقیم ہیں۔

اس گروپ کی قیادت لندن میں رہنے والے انسانی حقوق کے سرگرم کارکن یحییٰ عصیری کر رہے ہیں۔ جن کا کہنا ہے کہ ان کی سیاسی جماعت کا مقصد سعودی عرب میں شاہی سلطنت کی جگہ ایک جمہوری طرز کی حکومت کا قیام ہے۔

حزب اختلاف کی نئی جماعت نیشنل اسمبلی پارٹی نے کہا کہ موجودہ حکومت بڑی تعداد میں سیاسی رہنماؤں کی گرفتاریاں اور قتل کر کے مسلسل ظلم و تشدد کی راہ پر عمل پیرا ہے۔

سعودی عرب کی فضائیہ کے سابق افسر عصیری سعودی عرب کا کہنا ہے کہ اپوزیشن پارٹی کا قیام ایک، ایسے نازک وقت پر ہوا ہے جب ملک کو بچانا بہت ضروری ہوگیا ہے۔

اپوزیشن جماعت کے قیام اور اس کی جانب سے جاری ہونے والے بیانات پر سعودی عرب کی طرف سے ابھی تک کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا ہے۔

واضح رہے کہ سعودی حکمران اور انتظامیہ ناقدین اور مخالفین کی آواز دبانے کے لیے ظلم و جبر اور تشدد کا راستہ اپنایا ہوا ہے اور سعودی نام نہاد عدالتوں نے سیاسی مخالفین کے درجنوں رہنماوں کو موت کی سزا دے چکی ہے۔

سعودی عرب آئندہ نومبر میں جی 20 چوٹی اجلاس منعقد کرنے کی تیاریوں میں مصروف ہے لیکن خام تیل سے ہونے والی آمدنی میں شدید کمی کے باعث وہ معاشی مندی کی مار جھیل رہا ہے۔

سیاسی مبصرین کے مطابق اس صورت حال میں اپوزیشن جماعت کا اعلان اس کے لیے ایک نیا اور سخت چیلنج ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close