اہم ترین خبریںپاکستان کی اہم خبریں

امریکی منشاءکے خلاف پاکستان کی ملائیشیا اور ترکی سے قربت ، سعودی عرب میں پاکستانیوں پر قیامت ٹوٹ پڑی

اطلاعات کے مطابق گزشتہ چند دنوں میں سعودی عرب کے مختلف شہروں سے 30ہزار سے زائد پاکستانیوں کو جبری طور پر گرفتار کرکے جیلوں میں ڈال دیا گیا ہے

شیعت نیوز: امریکی مفادات کے برخلاف عمران خان کے دورہ ملائیشیا اور ترک صدر رجب طیب اردوان کے دورہ پاکستان سے آگ بگولا ہوکر آل سعود نے پاکستانیوں پر سعودی عرب کی سرزمین تنگ کرنا شروع کردی ہے ۔ اطلاعات کے مطابق گزشتہ چند دنوں میں سعودی عرب کے مختلف شہروں سے 30ہزار سے زائد پاکستانیوں کو جبری طور پر گرفتار کرکے جیلوں میں ڈال دیا گیا ہے ۔

تفصیلات کےمطابق سعودی عرب میں پاکستانیوں کو گزشتہ چند دن سے سعودی انتظامیہ کی جانب سے شدید مشکلات کا سامنا ہے، ذرائع کے مطابق گذشتہ چند دنوں میں 30 ہزار سے زیادہ پاکستانیوں کو بلاوجہ گرفتار کرکے حراستی مراکز مین ڈالا گیا ہےاور ان پر بدترین تشدد کیا جارہاہے،کہا جارہا ہے کہ یہ اقدامات وزیراعظم کے دورہ ملائشیا اور ترک صدر کے دورہ پاکستان کا ردعمل ہے ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب مقیم پاکستانیوں پر اچانک حکومت کی جانب سے کریک ڈاؤن ولی عہد محمد بن سلمان کے خصوصی احکامات کی بنیاد پر کیا جارہا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں: جناب زہرا ؑ نےزخمی بدن کیساتھ سخت اور مشکل حالات کے باوجود ولایت کا دفاع کیا،قاضی نیازحسین نقوی

باخبر ذرائع کے مطابق امریکی وسعودی منشاء کے خلاف وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے دورہ ملائیشیا اور ترک صدر رجب طیب اردوان کے دورہ پاکستان سے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان شدید غم وغصے میں مبتلا ہے ۔ سعودی حکومت کسی صورت پاکستان کو امریکی سعودی بلاک سے باہر نکلتا نہیں دیکھناچاہتی ،ان کی خواہش ہے کہ پاکستان ماضی کی طرح مستقل میں بھی امریکی وسعودی ناپاک عزائم کی تکمیل کی تجربہ گاہ بنا رہے اور چند ملین ڈالروں کے عیوض اپنی قومی سلامتی ، خودمختاری اور استحکام کو امریکہ اور سعودیہ کے ہاتھوں گروی رکھتا رہے ۔

یہ بھی پڑھیں: اسرائیلی وزیر اعظم کا ایران کے خلاف امریکی ، اسرائیلی اور سعودی اتحاد کی تشکیل کا انکشاف

واضح رہے کہ چند ماہ قبل ملائیشیا کے وزیر اعظم مہاتیرمحمد نے امت مسلمہ کے مسائل کے حل کیلئے کوالالمپور میں ایک مسلم ممالک کا سربراہی اجلاس منعقد کیا تھا جس میں پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کو بھی خصوصی طور پر شرکت کی دعوت دی گئی تھی لیکن امریکی اشاروں پر سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات نے پاکستان کو مڈل ایسٹ میں برسر روز گار 40لاکھ پاکستانی محنت کشوں اور مزداروں کو ملک بدر کرنے کی دھمکی دی تھی، جس کی تصدیق ترک صدر اورملائیشین وزیر اعظم نے بھی کی تھی ۔ جس کے بعد عمران خان کو سعودی عرب اور آرمی چیف جنرل باجوہ کو عرب امارات کا ہنگامی دورہ کرکے وہاں کے حکمرانوں کو اعتماد میں لینے کی کوشش کرنی پڑی جوکہ ناکام رہی اور پاکستان نے ملائیشیا کانفرنس کا بائیکاٹ کردیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: شہید قاسم سلیمانی کی پاکستان کے شیعہ سنی عوام میں بڑھتی مقبولیت،تکفیری ملااورنگزیب فاروقی کی بلبلاہٹ عروج پر

دوسری جانب پاکستان دفتر خارجہ کی جانب سے تاحال اس معاملے پر کوئی واضح اور ٹھوس موقف سامنے نہیں آیاہے ، سعودی حکومت کے اس متعصبانہ اور سفارتی آداب کے منافی عمل پر حکومت پاکستان کو فوری ردعمل دینا چاہئےاور اپنا احتجاج ریکارڈ کروانا چاہئےیہ ہماری حکومت کا فرض ہے اور پاکستانی پرنٹ اور الیکٹرونک میڈیا پر بھی لازم ہے کہ سعودی حکومت کے اس گھٹیا پن کو دنیا بھر کے سامنے آشکار کرے۔ بعض ذرائع کے مطابق اطلاعات ہیں کہ وزیر اعظم عمران خان جلد ایک مرتبہ پھرسعودی عرب کے دورے پر روانہ ہونے والے ہیں ، ایک دو روز میں اس متوقع دورہ سعودیہ عرب کا باضابطہ اعلان متوقع ہے ۔ غالباً پاکستانی حکومت دوبارہ سعودیہ عرب کی شاہی حکومت کو کوئی وضاحت دینے جارہی ہے۔۔۔۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close