سعودی عرب

34 ممالک اتحاد کا دوسرا رخ، سعودیہ نے زمینی فوج شام میں اترانے کا اعلان کردیا

شیعیت نیوز: سعودی عرب کے فوجی ترجمان کاکہنا ہےکہ اگرامریکی عسکری اتحادی ممالک تیار ہیں تو ریاض زمینی فوج شام میں بھیجنے کیلئے تیار ہے۔ بریگیڈیئر جنرل احمد عسیری نے کہا کہ اگر آئندہ ہفتے برسلز میں امریکا کی قیادت میں بین الاقوامی عسکری اتحاد سے منسلک ممالک کے وزرائے دفاع کے اجلاس میں اس بابت اتفاق کیا گیا تو سعودی عرب زمینی افواج شام بھیج سکتا ہے –

واضح رہے کہ سعودی عرب نے نام نہاد 34 ممالک کا اتحاد داعش کے خلاف بنایا تھا لیکن داعش مخالف قوتیں ایران، شام اور روس نے اس اتحاد کو اپنے خلاف قرار دیا تھا، جبکہ ایران نے واضح الفاظ میں کہا تھا کہ 34ممالک کا اتحاد ایران کے خلاف ہے۔ شام میں سعودیہ عرب کی جانب سے فوجیں بھیجنے کی بات سے واضح رہے کہ اسکا مقصد داعش کے خلاف جنگ میں شامل ہونا نہیں بلکہ شام میں شامی فوج، ایران اور حزب اللہ کی جانب سے داعش کے خلاف مسلسل کامیابیوں کو روکنا ہے، حال ہی میں شامی فوج اور اتحادیوں نے دو اسٹریجیک سطح شہر داعشی دہشتگردوں سے آزاد کروائے ہیں جو چار سال سے محاصر ے میں تھے، جبکہ سعودی عرب کے کئی اہم مہرے بھی اس جنگ میں ہلاک ہوچکے ہیں جسکے بعد سعودیہ عرب نے خود اس میدان میں اپنے اتحادیوں کے ساتھ اترانے کا اعلان کیا ہے تاکہ داعش کے ساتھ مل کر وہ ایران حزب اللہ و شامی فوج کے ساتھ لڑسکیں۔

دوسری جانب ماہرین نے اس اعلان کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب اپنی سرحدوں کے لئے دوسرے ممالک سے فوج منگوارہی ہےاور شام کو داعش سے آزاد کرنے خود جارہے ہیں یہ ذومعنی بات ہے، انہوں نے کہا کہ اگر ایسا ہوا تو سعودی عرب اس جنگ میں 34 ممالک کو اپنے ساتھ شامل کرے گا اور اسطرح ایران کا خدشہ ثابت ہوجائے گا کہ یہ اتحاد اسکے خلاف بنا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close