اہم ترین خبریںپاکستان

آرڈر خواہ 2009ء کا ہو یا 2020ء کا، جی بی کے عوام کیساتھ ناانصافی پر مبنی اقدام ہے، علامہ شیخ نیئرعباس

ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل شیخ نیئرعباس مصطفوی نے نومل میں نماز جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا

شیعت نیوز: مودی سرکار کے مظالم کا ڈھنڈور پیٹنے والوں نے جی بی کے عوام کو آرڈرز کے ذریعے غلامی کی زندگی بسر کرنے پر مجبور کر دیا ہے۔ مودی سرکار کے منہ پر طمانچہ مارنا ہے تو گلگت بلتستان کے عوام کو آئینی شناخت دی جائے۔ آرڈر خواہ 2009ء کا ہو یا 2020ء کا، جی بی کے عوام کیساتھ ناانصافی پر مبنی اقدام ہے۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل شیخ نیئرعباس مصطفوی نے نومل میں نماز جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

یہ بھی پڑھیں:ٹانک، سکیورٹی اداروں کے آپریشن میں کالعدم ٹی ٹی پی کے دوتکفیری دہشتگردواصل جہنم

انہوں نے آرڈر 2020ء کو مسترد کرتے ہوئے اس آرڈر کو جی بی کے عوام کے ساتھ مذاق قرار دیا اور کہا کہ ہم نے ڈوگرہ راج سے خود کو آزاد کروایا ہے اور اپنے قوت بازو سے یہ خطہ آزاد کروایا لیکن شروع دن سے جی بی کے عوام کو ان کی شناخت نہیں ملی اور یہی وجہ ہے کہ آج جی بی کا ہر فرد وفاقی حکمرانوں سے نالاں نظر آتا ہے۔ حکومت ہوش کے ناخن لے اور گلگت بلتستان کو آئینی شناخت دے۔

یہ بھی پڑھیں:سرزمین مقدس حجاز میں اسلامی اقتدار کی پامالی کا سلسلہ جاری،خواتین اورمردوں کے تاش کے مقابلے

شیخ نیئرعباس نے سی ٹی ایس پی (CTSP) کی مبینہ دھاندلیوں کی طرف اشار ہ کرتے ہوئے کہا کہ اس ادارے نے کرپشن کی حد کر دی ہے۔ سرکاری ملازمتوں کی ریکروٹمنٹ کیلئے پیپرز آؤٹ کئے جاتے ہیں اور اپنے من پسند افراد کو نوکریاں دی جا رہی ہیں جبکہ میرٹ کے نام پر حقدار افراد کو ملازمت سے محروم کیا جا رہا ہے۔ اس ادارے کو اس کی مبینہ دھاندلیوں کے پیش نظر فوری طور پر ختم کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں:اسلامی جمہوریہ ایران مسلمانوں کے حقوق کے دفاع میں ہمیشہ پیش پیش رہا ہے، نویدقمر

انہوں نے مزید کہا کہ جی بی کی مارکیٹوں میں مضر صحت اشیائے خورد و نوش کی بھرمار ہے، جس کی وجہ سے بیماریاں عام ہو چکی ہیں، حکومت اس معاملے میں فوری اقدامات کرکے مضر صحت چیزوں کی فروخت پر پابندی لگائے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close