مشرق وسطی

شام: دمشق کے قریب تکفیریوں سے واپس لیے گئے علاقے میں اجتماعی قبر دریافت

شیعت نیوز: شامی فوج نے دمشق کے قریب تکفیری دہشت گردوں کے زیر قبضہ رہنے والے علاقے میں تقریباً 70 لاشوں پر مشتمل ایک اجتماعی قبر دریافت کرلیا ہے۔

شامی ذرائع کے حوالےسے خبر دی ہے کہ اجتماعی قبر مشرقی علاقے غوطہ میں پائی گئیں۔

یہ بھی پڑھیں : شامی فوج نے حلب – دمشق ہائی وے کو اپنے کنٹرول میں لے لیا

یہ اجتماعی قبریں شامی فورسز کی جانب سے ان علاقوں کا قبضہ حاصل کرنے بعد سامنے آئی ہیں۔

سرکاری نیوز ایجنسی صنعا نیوز نے خبر دی ہے کہ ہلاک کیے گئے عام شہری اور سیکیورٹی اہلکار تھے جنہیں دہشت گرد گروہوں نے پھانسی دی۔

واضح رہے کہ دمشق کے مشرق میں واقع گنجان آباد علاقے پر امریکہ اور اسرائیل کے حمایت یافتہ تکفیری دہشت گردوں کا کم از کم 6 برس تک کنٹرول رہا تھا جس کے بعد 2018 میں طویل اور خونی جنگ کے بعد حکومت نے اپنا کنٹرول حاصل کیا تھا۔

سرکاری خبر ایجنسی نے ایک سینئر پولیس افسر کے حوالے سے بتایا کہ یہ ہلاکتیں 2012 اور 2014 کے درمیان ہوئی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : یمنی فوج کے حملوں میں درجنوں جارح سعودی فوجی ہلاک اور زخمی

خیال رہے کہ حالیہ برسوں میں بہت ساری اجتماعی قبریں شام میں پائی گئیں، خاص طور پر ان علاقوں میں جو پہلے داعش گروپ کے زیر کنٹرول تھے۔

شامی آبزرویٹری برائے ہیومن رائٹس کے مطابق 2011 میں جنگ کے آغاز سے اب تک 3 لاکھ 80 ہزار سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

ہزاروں افراد اب بھی لاپتہ ہیں اور گزشتہ ہفتے ہیومن رائٹس واچ نے شام کے حکام کو اس حوالے سے تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close