مشرق وسطی

شام : دیرالزور کے العمر تیل کی تنصیبات پر امریکہ کا حملہ

شیعت نیوز: شام کے علاقے دیرالزور کے العمر تیل کی تنصیبات میں تعینات امریکہ کے دہشت گرد فوجیوں نے کل رات شام اور عراق کے سرحدی علاقوں میں فوجی مراکز پر میزائل اور توپوں کے گولوں سے حملہ کیا۔

العالم کی رپورٹ کے مطابق خبری ذرائع نے شام کے علاقے دیرالزور کی فوجی چھاؤنی پر امریکہ کے دہشت گرد فوجیوں کے حملے کی خبر دی ہے۔ ابھی تک ان حملوں سے ہونے والے جانی نقصان کے بارے میں کوئی رپورٹ سامنے نہیں آئی۔

لبنان کے ٹیلی ویژن چینل المیادین نے بھی رپورٹ دی ہے کہ امریکی جنگی طیاروں نے عراق اور شام کے سرحدی علاقے القائم پر پروازیں کی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : ہم شام سے غیر ملکی فوجیوں کو نکال باہرکریں گے۔ بثنیہ شعبان

دوسری طرف شام کے وزیر تجارت نے کہا ہے کہ امریکہ شام کا تیل چوری کرکے ترکی کے راستے دنیا کے مختلف ملکوں کو فروخت کر رہا ہے۔

رشیا ٹوڈے کے مطابق شام کے وزیر تجارت عاطف نداف کا کہنا تھا کہ شام کے دیگر علاقوں میں تیل کے ذخائر موجود ہیں لیکن جنگ کی وجہ سے تمام تنصیبات تباہ ہوچکی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شام کو اپنے استعمال کے لیے تیل باہر سے منگانا پڑ رہا ہے جبکہ ملک مرکزی بینک کے خلاف امریکی پابندیوں کی وجہ سے ہمیں مالی ٹرانزیکشن میں مشکلات کا سامنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : ادلب میں جنگ بندی کی صورتحال پر مطمئن ہیں۔ روس اور ترکی

عالمی سطح پر شام کی تیل کی پیداوار دو ارب پچاس کروڑ بیرل کے لگ بھگ بتائی جاتی ہے۔ امریکی صدر نے اکتوبر دوہزار انیس میں کہا تھا کہ وہ تیل نکالنے کے لیے ایک امریکی کمپنی کو شام کے اس علاقے میں بھیجنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

قبل ازیں روس کے وزیردفاع سرگئی شویگوف بھی متعدد بار کہہ چکے ہیں امریکہ شام کا تیل کھلے عام چوری کرکے عالمی مارکیٹ میں فروخت کر رہا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close