مشرق وسطی

شام کے شہر راس العین میں بم دھماکے میں 1 امریکی فوجی سمیت 5 افراد ہلاک

شیعت نیوز : شام کے صوبہ الحسکہ کے شہر راس العین میں بم دھماکے کے نتیجے میں 5 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق یہ صوبہ الحسکہ کے شمال میں واقع شہر راس العین میں بم دھماکہ ہوا ہے ۔ بم ایک کار میں رکھا گیا ہے ۔ کار بم دھماکے میں 5 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔ دھماکے کی ذمہ د اری ابھی تک کسی گروہ نے قبول نہیں کی ہے۔

دوسری جانب روسی خبررساں ایجنسی اسپتنک کے مطابق عراق میں داعش کے خلاف نام نہاد امریکی اتحاد نے اعلان کیا ہے کہ شام میں اس کا 1 فوجی مارا گیا ہے۔ امریکی اتحاد کے مطابق اس امریکی فوجی کی ہلاکت کا دشمن کے ساتھ جھڑپ یا کسی بھی قسم کی فوجی کارروائی کے ساتھ کوئی تعلق نہیں تھا۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی حکام امریکہ کے ساتھ مل کر جنگ و خونریزی کے راستے پر گامزن ہیں۔ جواد ظریف

بغداد میں واقع امریکی فوجی اتحاد کے بیان میں کہا گیا ہے کہ 21 جولائی نامی مشترکہ آپریشن فورس کا 1 اہلکار شام میں ہلاک ہو گیا ہے جبکہ ابتدائی تحقیقات کے مطابق اس فوجی کی ہلاکت کا دشمن کے ساتھ کوئی تعلق نہیں تاہم اس سلسلے میں مزید تحقیقات جاری ہیں۔ امریکی اتحاد نے اس حادثے سے متعلق کسی قسم کی تفصیلات فراہم نہیں کیں۔

دوسری طرف شامی میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ شام کے شمالی صوبے الحسکہ میں ممکنہ عوامی مزاحمتی کارروائی کے نتیجے میں امریکی فورسز کی ایک بکتر بند گاڑی الٹ گئی جس سے کئی ایک امریکی فوجی زخمی بھی ہوئے ہیں۔

ماہرین کے مطابق؛ گو کہ امریکی اتحاد کی جانب سے 1 امریکی فوجی کی تائید شدہ ہلاکت کو شام کے صوبے الحسکہ میں الٹنے والی امریکی بکتر بند فوجی گاڑی کے ساتھ جوڑا نہیں گیا تاہم اس بات کا قوی امکان موجود ہے کہ ہلاک ہونے والا امریکی فوجی، الحسکہ میں ممکنہ عوامی مزاحمت کے نتیجے میں تباہ ہونے والی امریکی بکتر بند گاڑی کے اندر مارا گیا ہو۔

واضح رہے کہ سال 2014ء میں امریکی صدر بارک اوباما کی جانب سے عراق کے اندر داعش کے ساتھ نام نہاد مقابلے کے لئے دنیا کے 60 ممالک پر مبنی ایک فوجی اتحاد بنایا گیا تھا جو تب سے ہی شامی حکومت کی اجازت کے بغیر غیر قانونی طور پر شامی سرزمین کے وسیع علاقے میں سرگرم ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close