مشرق وسطی

شام کے صوبہ حمص میں تیس داعش دہشت گرد ہلاک، امریکہ مخالف مظاہرہ

شیعت نیوز : شام کے صوبہ حمص میں داعش دہشت گردوں پر فوج کے حملے میں کم سے کم تیس داعش دہشت گرد ہلاک ہو گئے۔

میڈل ایسٹ نیوز ویب کے مطابق شام کے ہیومن رائٹس واچ کے سربراہ رامی عبد الرحمان نے اعلان کیا ہے کہ گذشتہ دو دن سے صوبہ حمص کے مشرقی مضافات میں واقع شہر السخنہ کے اطراف میں داعش کے اڈوں پر شامی فوج کے حملے جاری ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : امریکہ اور اسرائیلی حکومت ایرانی صلاحیتوں سے خوفزدہ ہیں۔ جواد ظریف

مشرقی شام سے ایک سال سے زیادہ عرصے سے داعش کے عناصر کا خاتمہ ہو چکا ہے تاہم اس کے باقیات مشرقی صوبہ حمص سے عراقی سرحد تک شام کے بیابانی علاقوں میں موجود ہیں۔

درایں اثنا شامی ذرائع نے صوبہ الحسکہ کے الشدادی شہر میں امریکی فوجی اڈے کے قریب ہونے والے بم دھماکے کی خبر دی ہے۔ جمعے کو بھی صوبہ دیرالزور کے کازیہ عیسی العصمان نامی علاقے سے امریکی فوجیوں کے گزرتے وقت ایک بم دھماکا ہوا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : فرانسیسی حکومت اور اسرائیل کے درمیان نئی کشیدگی

دوسری جانب شام کے عوام نے امریکہ مخالف مظاہرہ کرکے اس ملک میں امریکہ کی فوجی موجودگی پر اپنی سخت ناراضگی کا اظہار کیا۔

آئی آر آئی بی کی رپورٹ کے مطابق امریکہ کے صوبے الحسکہ کے عوام نے ہونے والے امریکہ مخالف مظاہرے میں امریکہ کے خلاف نعرے لگاتے ہوئے اس ملک سے غاصب امریکی فوجیوں کے فوری انخلا کا مطالبہ کیا۔

مظاہرین نے اسی طرح امریکہ کی جانب سے شام کے خلاف سزار قانون کے تحت عائد کی جانے والی نئی پابندیوں کی بھی مذمت کی۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ٹرمپ نے دسمبر 2019 میں شام کے خلاف سزار قانون کے مسودے پر دستخط کئے تھے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close