مشرق وسطی

شام کے شمال مشرقی لاذقیہ کے بعض علاقے دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد

شیعت نیوز : شامی فوج نے فوجی کارروائی کر کے شمال مشرقی لاذقیہ کے بعض علاقوں کو دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد کرا لیا ہے۔

مہر نیوز ایجنسی نے اسپوٹنیک نیوز ایجنسی کے حوالے سے رپورٹ دی ہے کہ شام کی فوج نے شمال مشرقی لاذقیہ کے مضافات میں کوبانی کے اطراف اور جبل الاکراد کے محور پر النصرہ محاذ اور ترکستانی گروہ کے دہشت گردوں کے اڈوں کو نشانہ بنایا اور ان علاقوں کو آزاد کرا لیا جن پر گذشتہ دنوں دہشت گردوں نے قبضہ کر لیا تھا ۔ اس کارروائی میں پینتالیس دہشت گرد ہلاک اور زخمی ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں : شامی جنگی طیاروں کی دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر بمباری

دوسری جانب شامی فوج کی یونٹوں نے صوبہ الحسکہ کے شمال مشرق اور شمالی مضافات میں اپنے اڈوں کو مضبوط بنانا شروع کردیا ہے تاکہ ترکی کے ہرطرح کے ممکنہ حملے کا مقابلہ کرسکیں۔

نواکتوبر کو شمالی شام میں ترکی کی فوج کے حملے کے بعد شام کی ڈیموکریٹیک فورس کے نام سے شامی کرد ملیشیا نے دمشق حکومت سے شمالی شام کے علاقوں کو اپنے کنٹرول میں لینے کی درخواست کی ہے۔ اس سمجھوتے کے مطابق شامی فوج نے اب تک شمالی شام کے بہت سے علاقے اپنے کنٹرول میں لے لئے ہیں۔

درایں اثنا شامی ذرائع نے شام کے قامشلی علاقے سے پچپن ٹرکوں سے بھاری مقدار میں اسلحے اور فوجی ساز و سامان عراق بھیجے جانے کی خبر دی ہے۔

یہ خبر ایسے عالم میں سامنے آئی ہے کہ ذرائع ابلاغ نے سنیچر کو اعلان کیا تھا کہ امریکی فوجی جنھوں نے ترکی کے فوجی حملے شروع ہونے کے بعد شمالی شام میں اپنے اڈے دیئے تھے اس وقت اس علاقے اور صوبہ دیرالزور میں واپس آگئے ہیں اور اپنے اڈے مضبوط بنانے اور نئے اڈے قائم کرنے میں مشغول ہیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close