اہم ترین خبریںمشرق وسطی

شام کے عفرین شہر میں ہونے والے بم دھماکے میں ساٹھ افراد ہلاک و زخمی

شیعت نیوز: شام کے صوبہ حلب کے عفرین شہر میں ایک کار بم کے دھماکے میں بیس سے زائد افراد جاں بحق اور دسیوں زخمی ہوگئے۔

حلب ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق شہر عفرین میں ہونے والے کار بم دھماکے کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر آگ بھڑک اٹھی جس نے گاڑیوں اور گھروں کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا۔

عینی شاہدین اور مقامی حکام کا کہنا ہے کہ اس دھماکے میں کم از کم بیس لوگ مارے گئے ہیں جبکہ چالیس سے زائد زخمی بھی ہوئے ہیں۔ مرنے والوں میں بچوں اور خواتین کو بھی دیکھا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : شام پر اسرائیل کا فضائی حملہ، امریکی فوجیوں کی گاڑی تباہ

گذشتہ چوبیس گھنٹے میں یہ عفرین میں ہونے والا دوسرا دھماکا ہے۔ پہلا دھماکا ترندہ روڈ پر ہوا تھا اور اس میں بھی لوگوں کی جان و مال کو نقصان پہنچا تھا۔

شہر عفرین اور اس کا مضافاتی علاقہ گذشتہ دو برسوں سے ترکی کی فوج، مسلح چھاپہ ماروں اور ان کے زیرکنٹرول دہشت گردوں کے قبضے میں ہے ۔

دوسری جانب امریکہ کے دہشت گرد فوجیوں نے کل رات شام کی قومی حاکمیت اور عالمی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے شام کے صوبے الحسکہ میں اپنے غیر قانونی فوجی اڈے میں ہتھیاروں سے بھرے 30 ٹرک منتقل کئے۔

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا کی رپورٹ کے مطابق امریکی فوجی ہتھیار اور ساز وسامان عراق کے الولید سرحد سے شام میں داخل ہوئے اور پھر صوبہ الحسکہ کے علاقے قامشلی کے غیر قانونی فوجی اڈے قصر تل بیدر منتقل ہو گئے۔

اس سے قبل بھی کئی بار امریکہ نے عراق سے شام میں فوجی ہتھیار اور ساز و سامان منتقل کیا تھا۔

امریکہ اور اس کے نام نہاد اتحادی دہشت گرد گروہوں کا مقابلہ کرنے کے بہانے غیر قانونی طور پر اور شام کی حکومت کی اجازت کے بغیر شام میں فوجی کارروائیوں میں مصروف ہیں۔

شامی فوج نے داعش کے خاتمے کے بعد امریکہ اور اس کے اتحادیوں کے حمایت یافتہ دیگر دہشت گرد گروہوں کے خلاف بھی کامیاب آپریشن انجام دیئے لیکن اس آپریشن میں شامی فوج کو امریکہ کے ساتھ ترک فوج کی شر پسندانہ مداخلت سے بھی روبرو ہونا پڑ رہا ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close