مشرق وسطی

شام پر ترکی کی فوج کا ایک بار پھر حملہ، انسانی اعضاء کی اسمگلنگ

شیعت نیوز : شام کے ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ ترکی کی فوج اور اس کے آلہ کاروں نے شام کے شمال مشرقی صوبے الحسکہ پر حملہ کیا ہے۔

سانا کی رپورٹ کے مطابق ترکی کی فوج اور اس کے آلہ کاروں نے شام کے شمال مشرقی صوبے الحسکہ کے ابو راسین علاقے سمیت کئی علاقوں پر حملہ کیا ہے۔

مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ ترکی کی فوج اور اس کے آلۂ کاروں نے اسی طرح تل حرمل، النویحات اور خضراوی کے دیہی علاقوں پر راکٹوں سے حملہ کیا جس کے سبب کافی نقصان ہوا۔

یہ بھی پڑھیں : لبنان سے اسرائیلی جاسوسی کے آلات برآمد، بڑے پیمانے پر جنگی تیاریاں

قابل ذکر ہے کہ ترکی تین برسوں سے حکومت کی اجازت کے بغیر شام میں موجود ہے اور شمالی شام کے بعض علاقوں کو اپنے قبضے میں لئے ہوئے ہے جس پر اسے عالمی سطح پر مخالفت کا بھی سامنا ہے۔

یاد رہے کہ شام میں دو ہزار گیارہ میں امریکہ اور اس کے یورپی اتحادیوں نیز سعودی عرب سمیت بعض مغربی ایشیا کے ملکوں کے حمایت یافتہ دہشت گرد گروہ شام میں داخل ہو گئے تھے جس کے بعد وہاں سیاسی و سکیورٹی بحران کا آغاز ہوا۔

دوسری جانب شام میں دہشت گرد گروہ اس ملک میں عوام کے قتل عام کے علاوہ انسانی اعضاء کی اسمگلنگ میں بھی ملوث تھے۔

شام کے ٹیلی ویژن چینل کی رپورٹ کے مطابق شام کی فوج نے ادلب کے علاقے معرۃ النعمان میں گشت کے دوران دہشت گردوں کے دو ایسے ٹھکانوں کو دریافت کیا کہ جن میں انسانی اعضاء بکھرے ہوئے تھے۔

اس رپورٹ کے مطابق شام میں دہشت گرد گروہ انسانی اعضاء خاص طور سے دل، جگر اور آنکھ کو شام سے ترکی لے جا کر فروخت کرتے تھے۔

شام کی فوج نے آپریشن کلین اپ کے موقع پر ایک ڈاکٹر کے گھر کی تلاشی لی جو دہشت گردوں کے ساتھ مل کر یہ کام کرتا تھا۔ اس گھر سے کئی انسانوں کے اعضاء ملے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close