مشرق وسطی

شامی فورسز کا ادلب کے اگلے مورچوں پر داعشی دہشت گردوں پر حملہ

شیعت نیوز : پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران دوسری بار شامی فورسز (ایس اے اے) نے جنوبی ادلب کے اگلے مورچوں پر داعشی دہشت گردوں پر حملہ کیا ہے۔

ادلب گورنریٹ کے ایک ذرائع کے مطابق ، شامی فورسز نے البرا قصبے کے قریب سعودی نواز داعشی دہشت گردوں کے مورچوں کو نشانہ بنایا ، جو کافر نابل کے شمال میں واقع ہے۔

اس ذرائع کا کہنا ہے کہ شام کی فوج نے دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر میزائل حملے کر کے تباہ کر دیئے ہیں علاوہ ازیں شامی فوج نے جنوبی ادلب کے علاقے جبل الزوویہ میں مزید دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : ایران کی کورونا وائرس کے خلاف جدوجہد کامیابی کی جانب گامزن

انہوں نے مزید کہا کہ شام کی فوج کے حالیہ حملوں کی وجہ M-4 شاہراہ (حلب-لتا کیہ شاہراہ) پر دہشت گردوں کی گرفت کافی کمزور ہو گئی ہے عنقریب شامی فوج ایم فور شاہراہ پر کنٹرول حاصل کرنے والی ہے۔

دوسری جانب شمالی شام پر ترکی اور داعش سے وابستہ عناصر کی جارحیت کا سلسلہ رکنے کے بعد تقریبا ایک لاکھ دس ہزار شامی پناہ گزیں صوبہ ادلب میں واپس آگئے ہیں

ترکی اور روس نے چھے مارچ کو ایک سمجھوتے پر دستخط کئے تھے جس کے بعد شمال مغربی شام میں واقع صوبہ ادلب میں جنگ بندی کے نفاذ پر عمل کیا جا رہا ہے۔

شامی پناہ گزینوں کے امور کے سربراہ محمد حلاجفی نے کہا ہے کہ گذشتہ چالیس دنوں سے جاری جنگ بندی کے نتیجے میں اب تک ایک لاکھ نو ہزار سات سو چودہ شامی پناہ گزیں ادلب واپس آ چکے ہیں۔

روس اور ترکی کے درمیان ہونے والے سمجھوتے کے مطابق شمالی شام کے M4 بین الاقوامی ایئرپورٹ سے چھے کلومیٹر کے فاصلے پر ایک پر امن راہداری بنائی جائے گی جس پر روس اور ترکی کی فوجی گاڑیاں گشت کرتی رہیں گی۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close