پاکستان

شجاع آباد میں 13 سالہ عیسائی بچی سے زیادتی کرنے والا تکفیری مولوی قاری زاہد گرفتار

متاثرہ بچی کے مطابق قاری زاہد گزشتہ دو سال سے اسے جنسی ہوس کا نشانہ بنا رہا تھا

شیعت نیوز :شجاع آباد کے علاقے راجہ رام میں 13 سالہ عیسائی لڑکی کو مدرسے میں زیادتی کا نشانہ بنانے والا تکفیری مولوی قاری زاہد گرفتار ۔متاثرہ بچی کے مطابق قاری زاہد گزشتہ دو سال سے اسے جنسی ہوس کا نشانہ بنا تے ہوئے زبان کھولنے پر قتل کرنے کی دھمکیاں دیتا آرہا تھا۔

اطلاعات کے مطابق ملتان کی تحصیل شجاع آباد کے علاقے راجہ رام کی ایک 13 سالہ عیسائی لڑکی کے ساتھ مدرسے میں زنا کرنے والا مقامی مسجد و مدرسے کا تکفیری مولوی قاری زاہد گرفتار کر لیا گیا۔ ایس ایچ او تھانہ راجہ رام کے مطابق گزشتہ روز جب بچی تکفیری مولوی کے ہاتھوں اپنی عزت گنوا کر گھر پہنچی تو اچانک اس کی طبیعت بگڑ گئی جس پر اس کا باپ اسے مقامی اسپتال لیکر پہنچا تو ڈیوٹی پر موجود لیڈی ڈاکٹر نے یہ انکشاف کیا کہ بچی کو بدترین زیادتی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

متاثرہ بچی کا باپ اپنی بیٹی کو لے کر تھانے پہنچا جہاں اس نے قاری زاہد کے خلاف مقدمہ درج کروایا۔ایس ایچ او نے فوری کاروائی کرتے ہوئے تکفیری مولوی قاری زاہد کو مسجد سے گرفتار کرکے تفتیش کے لئے نامعلوم مقام منتقل کر دیا۔ ایس ایچ او کے مطابق متاثرہ عیسائی بچی اور قاری زاہد کے خون کے نمونے لیکر ٹیسٹ کے لئے لیبارٹری بھجوا دیئے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں :تکفیری مولوی ریاض بسرا مسجد میں معصوم بچی کیساتھ زیادتی کرتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار

واضع رہے کہ فیصل آباد،قصور،ملتان سمیت پنجاب کے دیگر شہروں میں کالعدم سپاہ صحابہ کے تکفیری مولویوں سمیت مختلف مساجد و مدارس کے تکفیری مولوی معصوم بچوں اور بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتی اور اس کے بعد ان معصوم بچوں اور بچیوں کے سفاکانہ قتل کےکئی خوفناک واقعات پیش آئے ہیں

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close