اہم ترین خبریںپاکستان

شیعہ سوشل میڈیا ایکٹوسٹ توجہ فرمائیں ،تحریر لازمی پڑھیں اور دوسروں کوبھی ارسال کریں!

لہٰذا پاکستان میں فعال تمام شیعہ سوشل میڈیا ایکٹوسٹ جو فیس بک، ٹوئٹر، انسٹا گرام اور دیگر ذرائع استعمال کرتے ہیں وہ انتہائی محتاط اور ذمہ دارانہ رویہ اختیارکریں

شیعیت نیوز: وطن عزیزمیں حالیہ دنوں فرقہ وارانہ بنیادوں پر اختلاف اور تقسیم کی سازش زور پکڑ چکی ہے ، پاکستان کی دشمن قوتوں نے خفیہ ایجنڈے کے تحت اپنی مقامی آلہ کاروں کو خصوصی ٹاسک سونپاہےکہ وہ ریاست پاکستان کو کمزور کرنے اور موجودہ حکومت کے امریکہ ، اسرائیل اور سعودی عرب کے بجائے چین، روس، ترکی ، ایران اور ملائیشیا کے ساتھ بڑھتے دفاعی ، تجارتی اور معاشی تعلقات کے سبب اسےداخلی طور پرالجھایا جائے، ملک دشمن قوتوں کو سب سے زیادہ تکلیف برادر پڑوسی اسلامی ملک ایران کے پاک چائنہ اقتصادی راہ داری منصوبے میں شمولت سے ہوئی ہے ۔

ملک دشمن قوتوں نے پاکستان میں فعال اپنی ذرخرید فرقہ پرست تنظیموں کو علماء کوہدایات دیں ہیں کہ وہ شیعہ مکتب فکر کے عقائد میں شامل ایسے اختلافی موضوعات کو بنیاد بنا کر شور مچائیں جو ناصبیت سے ٹکراتے ہوں ، اسی بناءپر کبھی جناب سیدہ فاطمہ ؑ کے دربار خلافت میں جانے ، اپنا حق فدک مانگنے اور کبھی زیارت عاشورہ میں امام حسین ؑ اور اہل بیت اطہارؑ کے قاتلوں اور دشمنوں پر لعنت کرنے کو بنیاد بنا کر فتنے کھڑے کیئے جارہے ہیں ۔ افسوس کے سادہ لوح عوام اس سازش سے بے خبر ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: پیمرا کا متعصبانہ اقدام، 24نیوز چینل پر پابندی ،مذہبی منافرت پھیلانے والا بول نیوز آزاد

گزشتہ دو روز سے سوشل میڈیا پر مزہبی منافرت میں ملوث مختلف مسالک سے تعلق رکھنے والے افراد کی گرفتاریاں ظاہر کرتی ہیں کہ ریاست پاکستان نے موجودہ حالات میں واضح طور پر فیصلہ کیا ہے کہ ایسے تمام عناصر جو سوشل میڈیا پر بے دریغ کسی بھی مسلک یااس کے مقدسات کی توہین میں ملوث قرار پائے گا اس کے خلاف فوری سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی ، لہٰذا پاکستان میں فعال تمام شیعہ سوشل میڈیا ایکٹوسٹ جو فیس بک، ٹوئٹر، انسٹا گرام اور دیگر ذرائع استعمال کرتے ہیں وہ انتہائی محتاط اور ذمہ دارانہ رویہ اختیارکریں،کوئی بھی ایسی پوسٹ جس سے کسی دوسرے مذہب یا مسلک کے پیروکاروں کی دل آزاری ہوتی ہو اس کو شیئر کرنے ، کمنٹ کرنے یا لائک کرنے سے اجتناب کریں ۔

سوشل میڈیا پر مکتب اہل بیت ؑ ، آئمہ معصومین ؑ ، شیعیان حیدر کرار ؑ کے خلاف نشر ہونے والی تمام پوسٹوں کے اسنیپ شاٹس بمعہ ثبوت متعلقہ اداروں ، ایف آئی آے ، سائبر کرائم ونگ اور مقامی تھانے میں درخواست کے ساتھ جمع کروائیں اورمذہبی منافرت پھیلانے والے ان عناصر کی سرکوبی میں اپنا کردا ر ادا کریں، ملت جعفریہ ایک مہذب اور قانون پسند قوم ہے جو ریاست کے قوانین پر عمل کرنے کو اپنا شعار سمجھتی ہے ، سوشل میڈیا پر فقط کافر کافر شیعہ کافر کے نعرے اس بات کا واضح ثبوت ہیں ، اگر شیعہ قوم منظم نا ہوتی تو آج سوشل میڈیا پر کافر کافر شیعہ کافر سے زیادہ دوسرے مسالک کےخلاف کفر کے نعرے نشر ہوتے ۔

یہ بھی پڑھیں: حکومت، افغانستان کے حالات کے سلسلے میں جواب دے۔ امریکی ایوان نمائندگان

مگر یہ بھی یاد رکھا جائے کہ ہم حسین ع کے ماننے والے ہیں۔دوسروں کی تکفیر نہیں کرتے مگر اپنی عزت پر سودا بھی نہیں کریں گے۔ ریاست ہمارے حقوق کا تحفظ نہیں کرے گی تو ہم خود اپنا حق لیں گے۔

ہم حکومت کو ایک اور موقع دینا چاہتے ہیں۔تمام مومنین کو چاہیے کہ فورا حکومتی ادارے ایف آئی اے کے سائبر ونگ کو شیعہ کافر ٹرینڈ کے خلاف رپورٹ درج کروائیں۔ حکومت فوری ان شرپسندوں کو گرفتار کرے، انکے خلاف کارروائی کرے اور انکے تمام سوشل میڈیا اکاونٹس اور ویبسائٹس فوری بین کرے۔

ایف آئی اے کو شکایت درج کروانے کے لئے آپ اس ایڈرس پر ای میل بھیجیں اور ٹرینڈز کا لنک یا تصاویر ساتھ لگائیں

ای میل یہ ہے:[email protected]
یا پھر آپ ایف آئی اے کی ویبسائٹ پر آنلائن فارم پر کر سکتے ہیں 👇

http://complaint.fia.gov.pk/

اور ساتھ ہی آپ اینڈرائڈ پر پرائمنسٹر پورٹل کی ایپ ڈاونلوڈ کرکے وہاں بھی ایف آئی کو کملینٹ درج کروا سکتے ہیں

کمپلینٹ درج کروانے سے متعلق کسی مشکل کی صورت میں ایف آئی اے کی ہیلپ لائن پر کال کریں
111-345-786

یا پھر 9911 پر رابطہ کر سکتے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close