اہم ترین خبریںمشرق وسطی

شام: ادلب میں فضائی آپریشن، دہشت گرد کمانڈ سینٹر متعدد سرغنوں سمیت تباہ

شیعت نیوز : شام کے شمالی صوبے ادلب میں آج شامی فضائیہ کے طیاروں نے بین الاقوامی حمایت یافتہ دہشت گردوں کے کمانڈ سینٹر پر وسیع بمباری کی ہے۔

روسی خبررساں ایجنسی اسپتنک نے اس حوالے سے اعلان کیا ہے کہ روسی ڈرون طیاروں کی مدد سے ادلب کے اندر دہشت گرد گروہوں ’’حراس الدین‘‘ اور ’’انصار التوحید‘‘ کا مشترکہ کمانڈ سینٹر ٹریس کیا گیا تھا جسے شامی لڑاکا طیاروں کے حملے میں مکمل طور پر تباہ کر دیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق مذکورہ دہشت گرد کمانڈ سینٹر ادلب کے شمال مغربی حصے میں واقع الشیخ بحر نامی قصبے کے نواح میں واقع تھا جسے دہشت گردوں کی جانب سے مسلح کارروائیوں کے لئے آپریشن روم اور رابطہ آفس کے طور پر بھی استعمال کیا جاتا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : متحدہ عرب امارات نے اسرائیل سے دوستی کی دلدل میں اتر کراپنا وجود کھو دیا۔ اخوان المسلمون

ذرائع کے مطابق شامی فضائیہ کے آپریشن میں تباہ ہونے والے دہشت گرد کمانڈ سینٹر کے اندر لاجسٹک سپلائیز اور ذرائع ابلاغ کا وسیع ذخیرہ موجود تھا جبکہ کمانڈ سینٹر کی تباہی کے بعد باقیماندہ دہشت گرد نزدیکی پہاڑیوں میں واقع ایک مقام پر روپوش ہو گئے ہیں۔

انٹیلیجنس رپورٹ کے مطابق شامی ہوائی حملے کے وقت دہشت گرد کمانڈ سینٹر کے اندر بین الاقوامی حمایت یافتہ دہشت گرد تنظیموں کے متعدد سرغنہ بھی موجود تھے جبکہ اس حملے میں ان کی ہلاکت حتمی ہے۔

رپورٹ کے مطابق دہشت گرد کمانڈ سینٹر کے اندر موجود مسلح دہشت گرد جنوبی ادلب میں واقع شامی سکیورٹی فورسز کے مراکز اور سہل الغاب پر حملے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے۔

واضح رہے کہ داعش کے ساتھ وابستہ دہشت گرد گروہ حراس الدین شام کے اندر غیر ملکی حمایت کے ذریعے سال 2016ء میں تشکیل دیا گیا تھا جبکہ اس کی کمان اُن اردنی سرغنوں کے ہاتھ میں ہے جو قبل ازیں افغانستان، عراق اور قفقاز کے اندر مسلح کارروائیوں میں ملوث رہے ہیں۔ علاوہ ازیں داعش کے ساتھ وابستہ دہشت گرد گروہ انصار التوحید سابقہ جند الاقصی ہے جس کو قبل ازیں شامی شہر حماہ کے مشرقی علاقوں سے نکال باہر کر دیا گیا تھا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close