پاکستان کی اہم خبریں

بلاشبہ حق کے راستے میں سختیاں بھی آتی ہیں اور ان سختیوں کو خندہ پیشانی کیساتھ برداشت کرنا حسینیتؑ ہے،طاہرالقادری

سیدنا امام حسینؑ نے ظالم یزیدی نظام کو چیلنج کیا اور یزید کے باطل اقتدار اور فسق و فجور پر مبنی نظام حکومت کے سامنے سر جھکانے سے انکار کیا اور تاریخ عالم کی بے مثال قربانی دے کر ہمیشہ ہمیشہ کیلئے حق اور باطل، سچ اور جھوٹ کے درمیان لکیر کھینچ دی

شیعت نیوز: تحریک منہاج القرآن اور پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا ہے کہ حضرت امام حسینؑ حق تھے اور یہ حق قیامت تک کیلئے باوقار اور سربلند رہے گا، یزید ملعون نے اقتدار پر قبضہ مستحکم کرنے کیلئے اہلبیت اطہارؑ پر ظلم کے پہاڑ توڑے اور تاریخ انسانی کا بدترین گناہ اور جرم کیا، سیدنا امام حسینؑ نے ظالم یزیدی نظام کو چیلنج کیا اور یزید کے باطل اقتدار اور فسق و فجور پر مبنی نظام حکومت کے سامنے سر جھکانے سے انکار کیا اور تاریخ عالم کی بے مثال قربانی دے کر ہمیشہ ہمیشہ کیلئے حق اور باطل، سچ اور جھوٹ کے درمیان لکیر کھینچ دی، بلاشبہ حق کے راستے میں سختیاں بھی آتی ہیں اور ان سختیوں کو خندہ پیشانی کیساتھ برداشت کرنا حسینیتؑ ہے، جب تک حسینیؑ فکر ہمارے ایمان کا نیوکلیس رہے گی، کوئی یزید اپنے ظالم اقتدار کو زیادہ دیر تک مسلط نہیں رکھ سکے گا، آج بھی ہر طرح کے ظلم واستحصال اور یزیدی فکر کے قلع قمع کیلئے حسینی فکر، جذبہ حریت اور جرأت و بہادری پر عمل پیرا ہونا ہو گا۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے محرم الحرام کی آمد پر اپنے پیغام میں کہا کہ اہلبیت اطہار نے دین محمدی(ص) کی اصل شکل و صورت کو قائم و دائم رکھنے، اس کی ترویج و اشاعت اور احیاء کیلئے جان و مال کی بے مثال قربانیاں دیں اور رہتی دنیا تک کے مسلمانوں کو پیغام دیا کہ جب کوئی طاقت کے نشے میں سچ اور جھوٹ کی سرحدیں ملانے کی کوشش کرے، ظلم، دہشت کے ذریعے انسانوں کو غلام بنانے کی کوشش کرے، شعائر اسلام اور متفق شرعی احکامات پر حملہ آور ہو تو پھر جان ومال سے محبت کو ثانوی حیثیت دے دی جائے اور پوری ایمانی قوت کیساتھ سچ کا علم تھام کر کلمہ حق بلند کیا جائے۔ ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ حضور نبی اکرم (ص) حسنین کریمینؑ کو گلشن دنیا کے دو پھول قرار دیتے تھے اور ان سے بے حد محبت و شفقت فرماتے تھے، آپ (ص) کا فرمان ہے کہ قیامت کے دن میرے حسب نسب کے سوا ہر سلسلہ منقطع ہو جائے گا۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ آپ(ص) اہلبیتؑ اطہار سے محبت صراط مستقیم اور جنت کی طرف لے جانیوالا عمل ہے، اہلبیتؑ اطہار کی عزت و تکریم کی اہمیت اور فضیلت اس حدیث مبارکہ سے واضح ہوتی ہے جس میں آپ (ص) نے حضرت علی کرم اللہ وجہہ، حضرت فاطمہؑ، حضرت حسنؑ اور حضرت حسینؑ کو مخاطب کرتے ہوئے فرمایا تم جس سے لڑو گے میں بھی اس کیساتھ حالت جنگ میں ہوں اور جس سے تم صلح کرنیوالے ہو میں بھی اس سے صلح کرنیوالا ہوں۔ حضرت عائشہؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ(ص) نے فرمایا 6 بندوں پر میں لعنت کرتا ہوں اور اللہ تعالیٰ بھی ان پر لعنت کرتا ہے اور سابق انبیاء بھی ان پر لعنت کرتے ہیں، ان 6 قبیح افعال میں سے ایک میری عترت کی حرمت کو پامال کرنیوالا عمل ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close