اہم ترین خبریںپاکستان

اسرائیل کو تسلیم کرنے والوں کو ’’عالم اسلام کے خائن حکمران ‘‘ کے عنوان سے یاد رکھا جائے گا

شیعیت نیوز : مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے مابین ہونے والے امن معاہدے کو امت مسلمہ کے عالمی مفادات پر کاری ضرب قرار دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس معاہدہ کے ذریعے خلیجی ریاستوں کے مسلمان حکمرانوں نے صیہونیت کے سہولت کاروں کا کردار ادا کیا ہے۔عرب کے خائن حکمرانوں نے امت مسلمہ پر یہود و نصاری کے مفادات کو ہمیشہ ترجیح دی۔آج دنیا بھرمیں مسلمانوں کے زوال کا اصل سبب وہ اسلامی حکومتیں ہیں جو اپنے اقتدار کی بقا اور طوالت کے لیے عالمی استکباری قوتوں کے قدموں میں بیٹھی ہوئی ہیں۔

یہ خبر بھی پڑھیں عرب امارات نے اسرائیل سے معاہدہ کرکے امت مسلمہ سے بے وفائی کی ہے، سینیٹر سراج الحق

انہوں نے کہا کہ اس امن معاہدے کی رو سے اسرائیل کی غاصب ریاست کے ناپاک وجود کو تسلیم کر لیا گیا ہے۔جن عناصر نے اسلام کا لبادہ اوڑھ کر صیہونیت کے استحکام کا بیڑا اٹھا رکھا ہے تاریخ انہیں ہمیشہ ’’عالم اسلام کے خائن حکمران ‘‘ کے عنوان سے یاد رکھے گی۔اسرائیل، امریکہ اور بھارت کی اسلام دشمنی کسی سے بھی پوشیدہ نہیں۔یہ اسلام دشمن قوتیں مسلم امہ کو نقصان پہنچانے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتیں۔

متحدہ عرب امارات کی صیہونیت دوستی سے اس کے عزائم واضح ہو گئے ہیں۔اب مصلحتاً خاموشی اختیار کرنے کا مطلب اپنی نسلوں کو ان کے اسلامی تشخص اور دینی غیرت و حمیت سے بے نیاز کرنا ہے۔دنیا مختلف بلاکس میں تبدیل ہو رہی ہے۔جو ممالک یہود ونصاری سے متاثر ہیں وہ کبھی اسلامی بلاک کا حصہ نہیں بنیں گے۔عالم اسلام کو اپنی سالمیت و بقا کے لیے عالم کُفر کے سامنے دوٹوک موقف اختیار کرنا ہو گا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close