اہم ترین خبریںپاکستان کی اہم خبریں

بھارت نواز دہشت گرد گروہ کا حملہ، تربت میں پاک فوج کا 1جوان شہید ، 3زخمی

دو روز قبل بلوچستان کے ضلع گوادر کے علاقے اورماڑا میں آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ کمپنی (او جی ڈی سی ایل) کے کارواں پر دہشت گردوں کے حملے میں 7 سیکیورٹی گارڈز سمیت سیکیورٹی فورسز کے 14 اہلکار شہید ہوگئے تھے۔

شیعیت نیوز: بھارتی خفیہ ایجنٹوں کی وطن عزیز کے خلاف سازشیں جاری،بلوچستان کے شہر تربت کے قریب دہشت گردوں کی سیکیورٹی فرسز پر فائرنگ سے ایک فوجی اہلکار شہید اور 3 زخمی ہوگئے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق دہشت گردی کا واقعہ تربت سے 35 کلومیٹر جنوب مشرق میں جَھکی کے مقام پر پیش آیا۔

دہشت گردوں کے ساتھ سیکیورٹی فورسز کی پیٹرولنگ پارٹی کی فائرنگ کے تبادلے میں لانس نائیک وسیم اللہ شہید جبکہ 3 سیکیورٹی اہلکار زخمی ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں: اسلام کو انتہاء پسندوں نے ہائی جیک کیا، دہشتگردوں کو فرقہ واریت کے فروغ کیلئے ٹاسک دیا گیا،طاہرالقادری

واضح رہے کہ چند ماہ کے دوران سیکیورٹی فورسز پر حملوں میں اضافہ ہوا ہے جس میں کئی جوان شہید اور متعدد زخمی ہوچکے ہیں۔

دو روز قبل بلوچستان کے ضلع گوادر کے علاقے اورماڑا میں آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ کمپنی (او جی ڈی سی ایل) کے کارواں پر دہشت گردوں کے حملے میں 7 سیکیورٹی گارڈز سمیت سیکیورٹی فورسز کے 14 اہلکار شہید ہوگئے تھے۔

آئی ایس پی آر کا بیان میں کہنا تھا کہ ’گوادر سے کراچی جانے والے او جی ڈی سی ایل کے کاروان کی حفاظت پر مامور سیکیورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان کوسٹل ہائی وے پر اورماڑا کے قریب فائرنگ کا تبادلہ ہوا’۔

بیان میں کہا گیا کہ ‘سیکیورٹی فورسز نے مؤثر جواب دیا اور او جی ڈی سی ایل کے ملازمین کی سلامتی کو یقینی بناتے ہوئے انہیں جائے وقوع سے بحفاظت نکال لیا’۔

یہ بھی پڑھیں: ایم ڈبلیوایم ڈی آئی خان کے 3 رہنماؤں سمیت دیگرتین افراد کو ایم پی او کےتحت جیل بھیجنا بدنیتی اور متعصبانہ کاروائی ہے،علامہ وحید کاظمی

دہشت گردوں کے ساتھ مقابلے میں شہید ہونے والے جوانوں میں ‘پنجاب کے ضلع لیہ سے تعلق رکھنے والے صوبیدار عابد حسین، سبی کے نائیک محمد انور، ڈیرا غازی خان سے تعلق رکھنے والے لانس نائیک افتخار احمد، چکوال کے رہائشی سپاہی محمد نوید، بلوچستان کے ضلع پشین سے لانس نائیک عبداللطیف اور میانوالی سے تعلق رکھنے والے سپاہی محمد وارث شامل تھے۔

اسی روز خیبر پختونخوا کے قبائلی ضلع شمالی وزیرستان میں فوجی قافلے پر دہشت گردوں کے آئی ای ڈی دھماکے میں ایک افسر اور 5 سپاہی شہید ہوئے۔

دھماکے میں 24 سالہ کیپٹن عمر فاروق، 37 سالہ نائب صوبیدار ریاض احمد، 44 سالہ نائب صوبیدار شکیل آزاد، 36 سالہ حوالدار یونس خان، 37 سالہ نائیک محمد ندیم اور 30 سالہ لانس نائیک عصمت اللہ شہید ہوئے۔

قبل ازیں 12 ستمبر کو شمالی وزیرستان کی تحصیل میرانشاہ میں ریموٹ کنٹرول دھماکے کے نتیجے میں پاک فوج کے اہلکار شہید ہوگئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں: موجودہ حالات میں ہمیں انتہائی ہوشیاری اور بیداری کا ثبوت دینا ہوگا، علامہ عارف واحدی

آئی ایس پی آر کے مطابق ریموٹ کنٹرول دھماکا میرانشاہ کے بویا روڈ پر سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ کے قریب ہوا۔

بیان میں کہا گیا کہ دھماکے کے نتیجے میں 33 سالہ سپاہی ساجد شہید ہوگئے۔

4 ستمبر کو بھی شمالی وزیرستان میں پاک فوج کے قافلے کے قریب آئی ای ڈی دھماکے میں ایک افسر سمیت 3 اہلکار شہید ہو گئے تھے۔

آئی ایس پی آر کا بیان میں کہنا تھا کہ شمالی وزیرستان میں شگانشپا روڈ پر گھیریوم سیکٹر میں سڑک کی مرمت کرنے والی ٹیم کی حفاظت پر مامور پاک فوج کے دستے کے قریب دہشت گردوں کی جانب سے ریموٹ کنٹرول دھماکا کیا گیا۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close