مشرق وسطی

ترک فوج کا شام کے صوبے حلب کے متعدد علاقوں پر گولہ باری

شیعت نیوز: ترک فوج اور اس کے حمایت یافتہ دہشت گردوں نے شمالی شام کے صوبے حلب کے متعدد علاقوں پر گولہ باری کی ہے۔

دمشق میں سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے بتایا ہے کہ ترک فوج اور اس کے حمایت یافتہ دہشت گردوں نے حلب کے علاقوں مرعناز، المالکیہ، العلقمیہ اور منغ پر درجنوں راکٹ داغے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق ان حملوں میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم کھڑی؛ فصلوں اور مکانات کو کافی نقصان پہنچا ہے۔

شام میں دہشت گردوں کے آخری گڑھ حلب کے خلاف شام اور اس کی اتحادی فوجوں کے فیصلہ کن آپریشن پر ترکی نے منفی ردعمل ظاہر کیا ہے اور انقرہ کی جانب سے دمشق کو دھمکیاں دی جارہی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : صوبہ ادلب میں شامی فوج دوبارہ آپریشن کے لئے آمادہ

ترکی کو شام میں دہشت گردوں کے اہم ترین حامیوں میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔ ترک فوج نے پچھلے چند ماہ کے دوران دہشت گردوں کی حمایت میں بارہا شامی فوج کے ٹھکانوں پر حملے کیے ہیں۔

ترکی نے شمالی شام کے وسیع علاقے پر قبضہ بھی کر رکھا ہے۔ پچھلے تین برس کے دوران ترکی نے شامی سرزمین کو بارہا جارحیت کا نشانہ بنایا ہے۔

واضح رہے کہ شامی فوج نے داعش کے خاتمے کے بعد امریکہ اور اس کے اتحادیوں کے حمایت یافتہ دیگر دہشت گرد گروہوں کے خلاف بھی کامیاب آپریشن شروع کیا ہے اور وہ اس وقت دہشت گردوں کے آخری گڑھ ادلب کو آزاد کرانے کے لئے سرگرم عمل ہے لیکن اس آپریشن میں شامی فوج کو امریکہ کے ساتھ ترک فوج کی شر پسندانہ مداخلت سے بھی روبرو ہونا پڑ رہا ہے۔

شام میں دو ہزار گیارہ میں امریکہ اور اس کے یورپی اتحادیوں نیز سعودی عرب سمیت بعض مغربی ایشیا کے ملکوں کے حمایت یافتہ دہشت گرد گروہ شام میں داخل ہو گئے تھے جس کے بعد وہاں بحران کا آغاز ہوا تھا ۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close