مشرق وسطی

ترک صدر نے امریکی دباؤ کو سختی کے ساتھ مسترد کر دیا

ترک صدر رجب طیب اردوغان نے کہا ہے کہ ان کا ملک امریکی دباؤ کے باوجود روسی دفاعی نظام ایس فور ہنڈریڈ کی خریداری سے دستبردار نہیں ہو گا۔

انقرہ میں حکمراں جماعت جسٹس اینڈ ڈیویلپمنٹ پارٹی کے ارکان سے خطاب کرتے ہوئے صدر رجب طیب اردوغان کا کہنا تھا کہ ترکی اپنے موقف سے ایک قدم بھی پیچھے نہیں ہٹے گا۔
انہوں نے کہا کہ روس سے دفاعی نظام خریدنے یا نہ خریدنے کا معاملہ ترکی سے تعلق رکھتا ہے، تیسرے فریق کو اس مداخلت کا حق نہیں۔
صدر رجب طیب اردغان نے کہا کہ ترکی اپنی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے کسی سے اجازت لینے کا محتاج نہیں اور نہ ہی ہم اس معاملے پر کسی سے مذاکرات کریں گے۔
ترک صدر، جمعے اور ہفتے کو جاپان میں ہونے والے گروپ بیس کے اجلاس کے موقع پر اپنے امریکی ہم منصب ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات بھی کرنے والے ہیں۔
یہ ملاقات امریکہ کی جانب سے روسی دفاعی نظام کی خریداری سے دستبردار ہونے کے لیے ترکی کو دی جانے والی مہلت ختم ہونے سے ایک ماہ پہلے ہو گی۔
امریکہ نے ترکی کو روس سے ایس فور ہنڈریڈ نظام کی خریداری سے دستبردار ہونے کے لیے اکتیس جولائی تک کی ملہت دی ہے، بصورت دیگر انقرہ کے خلاف پابندیاں عائد کرنے کی دھمکی دی ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close