مشرق وسطی

ترکی اور تکفیری گروہ پانی کو ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہے ہیں۔ شام

شیعت نیوز: اقوام متحدہ میں شام کے مستقل مندوب نے کہا ہے کہ ترکی اور اس کے حمایت یافتہ تکفیری گروہ الحسکہ کے شہریوں کے خلاف پانی کو بطور ہتھیار استعمال کر رہے ہیں۔

شام کی صورتحال کے بارے میں سلامتی کونسل کے اجلاس سے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے بشار جعفری کا کہنا تھا کہ ترکی اور اس کے حمایت یافتہ تکفیری گروہ نے الحسکہ کے شہریوں پر پانی کی سپلائی بند کر دی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : شام : امریکی حمایت یافتہ داعشی دہشت گرد غویران جیل سے فرار

انہوں نے کہ ترک فوج شمالی شام میں قائم اپنے اڈوں کو دہشت گردوں کی حمایت اور انہیں ہدایات دینے کے لیے استعمال کر رہی ہے۔

بشار جعفری نے صوبہ ادلب میں شامی فوج اور اس کے اتحادیوں کے آپریشن کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ فوجی آپریشن، اس علاقے سے دہشت گرد گروہوں کے صفائے کی غرض سے انجام پا رہا ہے۔

شامی فوج اور اس کے اتحادیوں نے ملک میں دہشت گردوں کے آخری گڑھ ادلب میں آپریشن شروع کر رکھا ہے جس کی ترکی اور اس کے مغربی اتحادیوں کی جانب سے مخالفت کی جا رہی ہے۔

ترکی کو اس وقت شام میں باقی ماندہ دہشت گردوں کا اصل حامی تصور کیا جاتا ہے۔ ترک فوج نے پچھلے چند ماہ کے دوران بارہا شامی فوج کے ٹھکانوں اور بنیادی تنصیبات پر حملے بھی کیے ہیں۔

ترکی نے شمالی شام کے وسیع علاقے پر قبضہ بھی کر رکھا ہے۔ پچھلے تین برس کے دوران ترکی نے شامی سرزمین کو بارہا جارحیت کا نشانہ بنایا ہے۔

ادلب کی جانب شامی افواج کی پیشقدمی روکنے کے لئے امریکہ اور ترکی نے تگ دو تیز کردی ہے اور ترکی نے غیر قانونی طور پر شام میں اپنے فوجی اتار کے ادلب کے قریب فوجی مورچے بنالئے ہیں اور دہشت گردوں کے خلاف شامی افواج کے آپریشن کی مخالفت کررہی ہے ۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close