اہم ترین خبریںمشرق وسطی

متحدہ عرب امارات کا اسرائیل کے ساتھ مل کرایک اور شرم ناک اقدام

واضح رہے کہ عرب ممالک میں سے مصر نے 1979 اور اردن نے 1994 میں اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کیا تھا جب کہ کئی برس بعد اب متحدہ عرب امارات اور بحرین نے بھی اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کر لیے ہیں۔

شیعیت نیوز: اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کا ویزا فری پالیسی پر اتفاق،امت مسلمہ کے سب سے بڑے دشمن اسرائیل اور امت مسلمہ کے حقوق کے نام نہاد ٹھیکیدار متحدہ عرب امارات نے ایک اور خنجر عالم اسلام کی کمر میں گھونپ دیاہے۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیل اور متحدہ عرب امارات نے چار اہم معاہدوں پر اتفاق کرلیا ہے، جن میں سے ایک معاہدے میں شہریوں کو ملک میں داخلے کے لیے ویزے سے استثنیٰ دیدیا گیا ہے۔ عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق متحدہ عرب امارات سے اسرائیل پہنچنے والے وفد نے وزیراعظم نیتن یاہو سے ملاقات کی۔

یہ بھی پڑھیں: عدم استحکام کی ہر کوشش کا بھرپور جواب دیں گے، آرمی چیف جنرل باجوہ

قبل ازیں اہم حکام سے ملاقاتوں میں 4 معاہدوں پر اتفاق کرلیا گیا تھا جس کے بعد وزیراعظم نیتن یاہو نے معاہدے پر دستخط کر دیئے۔ ان میں سے ایک معاہدے کے تحت دونوں ممالک نے نئے ویزہ فری پالیسی پر اتفاق کرلیا ہے جس کے تحت دونوں ممالک کے شہری ویزے کے بغیر بھی مخصوص شہروں میں سفر کرسکیں گے۔

یہ بھی پڑھیں: سیاست میں گرما گرمی اور تلخ حقائق ؟ || سچ بات؛ارشاد حسین ناصر

اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو نے یو اے ای کے وفد کے اسرائیلی دورے اور معاہدے پر اتفاق کو ‘امن کے لیے سنہری’ قرار دیا۔ اس معاہدے کے بعد عرب دنیا میں اماراتی پہلے شہری بن جائیں گے جنہیں اسرائیل میں داخل ہونے کے لیے اجازت نامے کی ضرورت نہیں ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں: آئی ایس او پاکستان کے سابقین نے پاک فوج اور آئینی اداروں کے خلاف منفی پروپگینڈے کو قابل مذمت قرار دے دیا

واضح رہے کہ عرب ممالک میں سے مصر نے 1979 اور اردن نے 1994 میں اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کیا تھا جب کہ کئی برس بعد اب متحدہ عرب امارات اور بحرین نے بھی اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کر لیے ہیں۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close