اہم ترین خبریںیمن

اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی یمن میں اپنی ذمہ داریوں کی ادائیگی میں ناکام رہے ۔ انصار اللہ

شیعت نیوز :یمن کی تحریک انصار اللہ کی سیاسی کونسل کے رکن نے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹین گریفتھس کو ذمہ داریوں کی ادائیگی میں ناکام قرار دیا۔

تحریک انصار اللہ کی سیاسی کونسل کے رکن محمد البخیتی نے کہا کہ اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریفتھس اپنی گفتگو میں جس طریقۂ کار کی بات کرتے ہیں وہ غلط ہے۔ البخیتی نے کہا کہ مذاکرات، یمن میں متصادم فریقوں کے درمیان ہونا چاہئیں نہ کہ یمن کی مفرور و مستعفی حکومت کے ساتھ۔

انہوں نے کہا کہ بیرونی لحاظ سے بھی یہ مذاکرات ایک فریق کی حیثیت سے یمنیوں اور دوسرے فریق اور پڑوسی ممالک کی حیثیت سے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات جیسے ممالک کے ساتھ ہونے چاہئیں۔

محمد البخیتی نے سعودی اتحاد کے سلسلے میں اقوام متحدہ کی جانبدارانہ پالیسیوں پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ حمایتیں یمن میں جنگ جاری رہنے کا باعث ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : گستاخ حضرت فاطمہ اشرف آصف جلالی ملعون یزید سے بڑا خبیث ہے، حافظ طاہر اشرفی

دریں اثنا المیادین ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق یمن کی اعلی انقلابی کمیٹی کے سربراہ محمد علی الحوثی نے اپنے ٹوئٹر پیج پر ٹوئٹ کیا ہے کہ سعودی اتحاد نے تیل بردار بحری جہازوں کو روک رکھا ہے جس سے یمن میں انسانی بحران اور زیادہ شدت اختیار کر گیا ہے اور یمنی عوام کی معاشی مشکلات مزید بڑھ گئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ صافر تیل بردار بحری جہاز کے جائزے و تعمیر کے لئے اقوام متحدہ کے اظہارِ رضامندی کے باوجود اب تک اس سلسلے میں کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا ہے۔

یمن کا صافر تیل بردار بحری جہاز مغربی یمن کے ساحلی سمندر میں گذشتہ چار برسوں سے لنگر انداز ہے اور جارح سعودی اتحاد اس آئل ٹینکر کی تعمیر سے روکتا رہا ہے۔ یمن کی عوامی تحریک انصاراللہ نے مذکورہ تیل بردار بحری جہاز کی فرسودہ حالت کے سبب ماحولیات پر پڑنے والے تباہ کن اثرات کی بابت بارہا خبردار کیا ہے۔

یاد رہے کہ یمن پر سعودی عرب کی جاری جارحیت کے نتیجے میں ہر سال تقریبا ایک لاکھ یمنی بچے حملوں، محاصرے، ادویات کی عدم رسائی اور ناقص غذا کے سبب اپنی جان گنوا رہے ہیں۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close