اہم ترین خبریںپاکستان

حکومت پر اسرائیل کو تسلیم کرنے کے لیے دباو ڈالا گیا، شیرین مزاری کا اعتراف

شیریں مزاری نے کہا کہ ہم امت مسلمہ کی بات کرتے ہیں لیکن مجھے دنیا میں اُمہ نظر نہیں آتی۔ مسلمان ایک دوسرے کا گلا کاٹنے میں مصروف ہیں۔

شیعیت نیوز: مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے زیر اہتمام اسلام آباد میں القدس کانفرنس کا اہتمام کیا گیا جس میں مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماوں نے خطاب کیا۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے کہا کہ القدس سمیت تمام مسائل کے حل کے لیے مسلمانوں کا اتحاد بنیادی شرط ہے، ہمیں ایران کو خراج تحسین پیش کرنا چاہیے جس کی بدولت آج دنیا بھر میں القدس کو یاد رکھا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یمن کے حوالے سے ہمارا موقف اور پالیسی بالکل واضح ہے کہ ہم نے اس جنگ میں فریق نہیں بننا۔ او آئی سی کا نام بدل کر اس میں غیر مسلم ممالک کو حصہ بننے کا موقع فراہم کر دیا ہے جو اس تنظیم کو کمزور کرے گا۔ امریکہ، اسرائیل اور بھارت ایک ایسی مثلث ہے جس کے مقاصد ایک جیسے ہیں۔

پاکستان سفارتی سطح پر مسئلہ فلسطین کو اجاگر کرنے میں کردار ادا کرے،سربراہ ایم ڈبلیو ایم

شیریں مزاری نے کہا کہ ہم امت مسلمہ کی بات کرتے ہیں لیکن مجھے دنیا میں اُمہ نظر نہیں آتی۔ مسلمان ایک دوسرے کا گلا کاٹنے میں مصروف ہیں۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ حکومت پر اسرائیل کو تسلیم کرنے کے لیے دباو ڈالا گیا، مگر حکومت پاکستان نے اس دباو کو قبول نہیں کیا، پاکستان کبھی بھی اسرائیل کی ریاست کو تسلیم نہیں کرے گا، فلسطین کے معاملے پر سب اسلامی ممالک کو ایک پیج پر آنے پڑے گا، ورنہ صہیونی ریاست کے مظالم بڑھتے جائیں گے۔ اب معاملہ کانفرنس سے نکل عملی اقدامات کا متقاضی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close