یمن

یمن میں سعودی اتحاد کے 80 فوجی ہلاک و زخمی، 1500 قیدیوں کی رہائی

شیعت نیوز : یمنی سرکاری فوج اور الحوثی قبائل کی جوابی کارروائی میں درجنوں سعودی اہلکار مارے گئے ہیں۔ دوسری طرف یمن میں کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر 1500 قیدیوں کو رہا کیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق یمنی فوج نے صوبہ مارب میں امریکہ اور اسرائیل کے حمایت یافتہ سعودی اتحادی اہلکاروں کے خلاف جوابی کارروائی کی جس کے نتیجے میں 80 اہلکارہلاک یا زخمی ہوگئے۔

صنعا کی حکومت سے وابستہ یمن نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق یمن کی فوج اور عوامی رضاکار فورسز نے صوبہ مآرب کے صرواح اور کوفل نامی علاقوں میں سعودی اتحاد کے حملے کو پسپا کرکے درجنوں اہلکاروں کو موت کے گھاٹ اتار دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : یمن: سعودی اتحاد کے 19حملے، یمنی فورسز کا مغربی پہاڑیوں پر مکمل کنٹرول

یمنی فوج کی جوابی کارروائی میں سعودی اتحاد کے 80 آلہ کار ہلاک و زخمی ہوئے۔

ہلاک ہونے والوں میں سعودی اتحاد کے بریگیڈ 310 کے کمانڈر حمید الدستوری اور بریگیڈ 72 کے کمانڈر خالد الجماعی بھی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ یمن کی فوج اور عوامی رضاکار فورسز نے جمعرات کے روزبھی مآرب صوبے کے شمالی علاقوں کے فوجی اڈوں کو اپنے کنٹرول میں لینے میں کامیابی حاصل کی تھی۔

دوسری جانب یمن کی قومی نجات حکومت نے اعلان کیا ہے کہ اس ملک میں کورونا وائرس کے نہ ہونے کے باوجود انسانی ہمدردی کے ناطے متعدد قیدیوں کو کورونا کے خطرے کے پیش نظر رہا کر دیاگیا ہے۔

یمن کے اٹارنی جنرل نبیل العزائی نے آج المسیرہ ٹیلی ویژن چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مارچ کے مہینے کے پہلے ہفتے سے اب تک کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر 1500 قیدیوں کو رہا کیا گیا ہے تاہم ان کا کہنا تھا کہ ابھی تک یمن میں کورونا وائرس میں کوئی بھی مبتلا نہیں ہوا ہے۔

یمن کی وزارت داخلہ کے سوشل ویلفئیر یونٹ کے ڈائریکٹرعبدالله الادی نے بھی المسیرہ ٹیلی ویژن چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کورونا سے قیدیوں کی جان کو کوئی خطرہ نہیں ہے اور اس سلسلے میں ہر قسم کے حفاظتی اقدامات انجام دیئے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ یمن کے دارالحکومت صنعا میں اس ملک کی قومی نجات حکومت نے نام نہاد سعودی اتحاد کی جانب سےکورونا وائرس کو یمن میں پھیلانے پرتشویش کا اظہار کیا ہے ۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close