یمن

یمن: سعودی اتحاد نے گزشتہ ۲۴ گھنٹوں کے دوران ۱۴۷ بار جنگ بندی کی خلاف ورزی کی

یمنی فوج کے ایک اعلی افسر نے پیر کی شب بتایا ہے کہ سعودی اتحاد کے آلۂ کاروں نے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران الحدیدہ میں 147 بار جنگ بندی کی خلاف ورزی کی ہے۔

ارنا کی رپورٹ کے مطابق یمنی فوج کے اس اعلی افسر نے المسیرہ ٹیلی ویژن چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جارح سعودی اتحاد نے جنگ بندی کے دعووں کے بر خلاف گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران یمن کے صوبے الحدیدہ پر متعدد بار راکٹ حملے کئے، جبکہ اس کے جاسوس طیارے طھی پانچ مرتبہ فضا میں اڑتے دیکھے گئے۔

اسکے علاوہ سعودی آلۂ کاروں نے ایک ڈرون حملہ، 42 میزائل حملے اور 94 بار فائرنگ کر کے الحدیدہ کے الحاج اور حیس علاقوں میں جنگ بندی کی خلاف ورزی کی۔

المسیرہ ٹیلی ویژن چینل کی رپورٹ کے مطابق سعودی اتحاد کے جنگی طیاروں نے اسی طرح مآرب صوبے کے مجزر علاقے پر 18 مرتبہ جبکہ الجوف صوبے کے علاقوں خب اور الشعف پر 4 مرتبہ بمباری کی۔ سعودی حملوں میں جانی اور مالی نقصان کی رپورٹ ابھی تک سامنے نہیں آئی۔

یمن کے خلاف جنگ اور جارحیت کا سلسلہ ایسے وقت میں جاری ہے جب سویڈن میں صنعاء اور ریاض کے وفد کے مابین 18 دسمبر 2018 کو الحدیدہ میں جنگ بندی کا معاہدہ طے پایا تاہم سعودی جنگی اتحاد نے اپنی ہی اعلان کردہ جنگ بندی کی ایک دن بھی پابندی نہیں کی۔

واضح رہے کہ سعودی عرب اور اس کے بعض اتحادی ممالک، امریکا اور دیگر مغربی ملکوں کی حمایت کے زیر سایہ مارچ دوہزار پندرہ سے یمن پر وحشیانہ حملے کر رہے ہیں۔ اس عرصے میں دسیوں ہزار یمنی شہری شہید و زخمی جبکہ دسیوں لاکھ یمنی بے سر و سامانی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔

سعودی عرب اپنی تمام تر وحشیانہ جارحیت کے باوجود اپنا ایک بھی مقصد اب تک حاصل نہیں کر سکا ہے اور اطلاعات اس بات کی نشاندہی کرتی ہیں کہ وہ جنگِ یمن کے مخمصے سے باعزت طور پر باہر نکل جانے کے لئے راہوں کی تلاش میں ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close